ریاض : سعودی عرب میں ایک ماں نے اپنے بیٹے کے قاتل کو معاف کر کے دیت لینے سے بھی انکار کر دیا۔ اس کے بعد گذشتہ چند گھنٹوں کے دوران میں سوشل میڈیا پر گردش میں آنے والے ایک ویڈیو کلپ نے سعودیوں بالخصوص نجران کے باسیوں کی توجہ حاصل کر لی۔تفصیلات کے مطابق قاتل کا نام محمد صلاح ابو خشم ہے۔ اس کی والدہ نے مقتول کے اہل خانہ کیلئے سفید جھنڈا لہرا دیا۔ مقتول کے اہل خانہ نے اس خاتون کے بیٹے کو غیر مشروط طور پر قصاص سے معافی دیدی۔ یہ معاملہ بنا کسی حل کے 18 برس تک چلتا رہا۔اس سلسلے میں ریکارڈ کیے گئے ویڈیو کلپ جنگل کی آگ کی طرح پھیل گئے۔ ویڈیوز میں بڑی قبائلی شخصیات کو مقتول کے اہل خانہ اور اس کے قبیلوں کی چیدہ شخصیات کیساتھ اکٹھا دیکھا گیا۔ فریقین کے بیچ بات چیت ہوئی جس کے بعد قاتل کیلئے معافی کا اعلان کر دیا گیا۔