• 425
    Shares

ریاض : سعودی عرب کا شمار مشرق وسطیٰ کی سب سے بڑی آٹوموٹیو مارکیٹوں میں سے ایک میں ہوتا ہے۔مزید یہ کہ 2020 تک آٹوموٹیو مارکیٹ میں 30 لاکھ خواتین ڈرائیوروں کا اضافہ، سرمایہ کاروں اور صنعت کے شرکا کے لیے بہت سارے مواقع کھولیگا جس میں کاروں کی فروخت سے لے کر موٹر انشورنس، گاڑیوں کی لیزنگ اور ڈرائیونگ سکول شامل ہیں۔یہ سعودی وژن 2030 کے اہداف کے حصول کے لیے اتھارٹی کی کوششوں کا حصہ ہے جو جدید خطوط پر استوار ایک مضبوط اقتصادی شعبے کا تصور کرتا ہے اور مملکت میں منصفانہ مسابقت کو فروغ دینا چاہتا ہے۔انڈسٹریل انویسٹمنٹ ڈویلمپنٹ ڈیپارٹمنٹ کے ڈائریکٹر محمد الزہرانی نے جنوری میں العربیہ ٹی وی کو بتایا تھا کہ مملکت کو توقع ہے کہ پہلی سعودی ساختہ کار 2022 میں لانچ کی جائے گی جبیل میں واقع رائل کمیشن نے تین عالمی کار سازوں کے لیے ضروری انفراسٹرکچر تیار کرنا شروع کر دیا ہے۔

ورق تازہ نیوز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں  https://t.me/waraquetazaonlineاور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔ 


اپنی رائے یہاں لکھیں