ریاض : سعودی عرب میں مجاز اتھارٹی نے نمازیوں میں کورونا کی تشخیص ہونے پر 22 مساجد کو عارضی طور پر بند کر دیا۔عرب میڈیا کے مطابق وزارت اسلامی امور کا کہنا ہے کہ 28 نمازیوں میں کورونا کی تشخیص ہوئی جس پر فوری اقدامات کرتے ہوئے مساجد کو عارضی طور پر بند کر کے سینیٹائزیشن شروع کر دیا گیا۔دارالحکومت ریاض میں 8 مساجد کو بند کیا گیا جب کہ مملکت کے دیگر حصوں میں دو روز کے دوران 14 مساجد کو وقتی طور پر بند کیا گیا ہے۔وزارت کا کہنا ہے کہ مساجد کی بندش کا فیصلہ نمازیوں کی صحت و سلامتی کو یقینی بنانے کیلئے کیا گیا ہے۔ مساجد کو سینٹائز اور حفاظتی تدابیر مکمل ہونے پر کھول دیا جائے گا۔مساجد کھلنے اور بند کرنے کے اوقات سمیت اذان اور تکبیر کے دورانیہ کو مزید کم کر دیا گیا۔ سماجی فاصلے اور کم سے کم عوامی میل جول کی ضروری سرگرمیوں میں بھی لوگوں کی تعداد کو محدود کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔وزارت اسلامی امور نے اعلان کیا ہے کہ اذان اور تکبیر کے درمیان وقفے 10 منٹ سے زائد کا نہیں ہوگا جب کہ نمازِ فجر میں یہ دورانیہ 20 منٹ ہوگا۔نماز کے لیے مساجد کھلنے کے دورانیہ کو بھی کم کر دیا گیا ہے۔ اذان پر مساجد کھولی جائیں گی اور جماعت کے 10 منٹ بعد بند کر دی جائیں گی۔مساجد میں ہونے والے تمام دعوتی اجتماعات اور سرگرمیوں کو معطل کر دیا گیا ہے اورآئندہ سے تمام پروگرام آن لائن منعقد کیے جائیں گے۔نماز جمعہ کے لیے جامع مساجد اذان سے 30 منٹ قبل کھولی جائیں گی اور نماز کے 15 منٹ بعد بند کر دی جائیں گی۔دوسری جانب کورونا کے بڑھتے کیسز کے باعث بحرین میں جمعرات سے مساجد بند کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ بحرینی وزارت اسلامی امور کا کہنا ہے کہ فیصلہ نمازیوں اور مقیم غیرملکیوں کے تحفظ کیلئے کیا گیا۔


اپنی رائے یہاں لکھیں