سر سے اسکارف کیوں اترا ؟ گرفتاری کے دو گھنٹے بعد ایرانی لڑکی کومے میں چلی گئی

1,537

تہران:اخلاقی اقدار کی نگرانی کے امور کو دیکھنے کی ذمہ دار ایرانی پولیس کی حراست میں آنے کے صرف دو گھنٹے کے بعد بائیس سالہ ایرانی لڑکی مہیسا امینی مکمل بے ہوشی میں چلی گئی ہے۔ پولیس کے مطابق اسے دل کا دورہ پڑا ہے۔

بائیس سالہ لڑکی کو اس حالت کو پہنچنے سے محض دو گھنٹۓ قبل اپنے والدین کے ساتھ تہران کی سیر کو نکلی تھی۔ اسے اس لیے اخلاقی پولیس نے گرفتار کیا کہ اس کے سرسرپر سکارف نہیں تھا۔

ایرانی قانون کے مطابق خواتین کو گھروں سے باہر سروں کو لازمی طور پر ڈھانپ کر رکھنا ہوتا ہے۔
یہ قوانین 1979 سے بنائے گئے ہیں جب آیت اللہ خمینی کے زیر قیادت ایران میں انقلاب آیا تھا۔

پولیس کے مطابق سر پر سکارف نہ لینا خواتین کے لیے قومی ڈریس کوڈ کی بھی خلاف ورزی ہے۔