سابق ریاستی وزیر انیل دیشمکھ کودو سال بعد ضمانت

135

ممبئی: بمبئی ہائی کورٹ نے پیر کو مہاراشٹر کے سابق وزیر داخلہ انیل دیشمکھ کو بدعنوانی کے ایک معاملے میں مشروط ضمانت دے دی۔نیشنلسٹ کانگریس پارٹی (این سی پی) کے رہنما دیشمکھ نے سنٹرل بیورو آف انویسٹی گیشن (سی بی آئی) اور انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ (ای ڈی) کی جانب سے مبینہ بدعنوانی اور منی لانڈرنگ کے معاملات میں گزشتہ سال 2 نومبر کو گرفتاری کے بعد سے تقریباً 13 ماہ جیل میں گزارے ہیں۔

جسٹس ایم ایس کارنک، جنہوں نے 8 دسمبر کو اپنا حکم محفوظ رکھا تھا، نے یہ فیصلہ سنایا۔ انہوں نے دیشمکھ کو ایک لاکھ روپے کی ضمانتی رقم جمع کرنے اور حسب ضرورت تفتیش کاروں کے دفتر میں حاضر ہونے کی ہدایت دی۔گزشتہ ماہ، عدالت نے انہیں ای ڈی کے منی لانڈرنگ کیس میں ضمانت دے دی تھی لیکن سی بی آئی کی خصوصی عدالت نے ان کی ضمانت کی درخواست مسترد کر دی تھی، جسے مسٹر دیشمکھ نے ہائی کورٹ میں چیلنج کیا تھا۔بمبئی ہائی کورٹ نے انہوں نے ضمانت تو دے دی لیکن ضمانت کے احکام پر دس دن بعد عمل آوری کی ہدایت دی ہے۔ اس طرح انیل دیشمکھ کو مزید 10 دن جیل میں گذارنے ہوں گے۔