!-- Auto Size ads-1 -->

ممبئی،16مئی(یواین آئی)سابق ایم پی اور کانگریس لیڈرسنئیرحسین دلوائی 100سال کی عمر میں انتقال آج یہاں انتقال کرگئے۔ان کے پسماندگان میں دو بیٹے اور بیٹی ہے۔مشہور ومعروف لیڈر حبیب فقہیہ نے کہاکہ مرحوم 1922 میں کوکن خطہ کے رتناگیری میں چپلون کے ایک گاؤں مرجولی میں پیدا ہوئے۔یہی سیاسی کیرئیر کی ی شروعات ہوئی۔آنجہانی وزیراعلی وائی بی چوان نے انہیں کھیڈ اور کھیڈبندر سے اسمبلی کا ٹکٹ دیااور وہ 1962 تا 1978 تک ایم ایل ایز رہے ۔اس کے بعد 1984 سے 1990 تک کے لیے راجیہ سبھا کے رکن منتخب ہوئے ،لیکن دسمبر 1984 میں لوک سبھا کے لیے منتخب ہونے کے بعد راجیہ سبھا سے استعفی دے دیا۔سنئیر حسین دلوائی کے انتقال پر سنئیر لیڈر حبیب فقہیہ اور دکن ایجوکیشن سوسائٹی پونے کے چیئرمین پی اے انعامدار نے گہرے صدمہ کا اظہار کیا ہے۔

انہوں نے کہاکہ آج کے سیاستدانوں کے لیے وہ ایک مثال ہیں کیونکہ انہوں نے سادگی سے زندگی گزاری اور ان فرزند بھی ملازمت پیشہ ہیں۔وہ جن حلقوں سے منتخب ہوتے رہے ہیں،ان میں مسلمانوں کی آبادی محض 9 _10فیصد سے زیادہ نہیں تھی۔انجمن اسلام کے صدر ڈاکٹر ظہیر قاضی نے انہیں خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہاکہ وہ اپنے حلقے میں مقبول رہے،سبھی فرقوں میں یکساں مقبول تھے۔انجمن اسلام جنرل کونسل کے ممبر رہے ،مہاراشٹراقلیتی کمیشن کے پہلے چیئرمین مقرر کئے گئے۔اللہ تعالیٰ نے انہیں نوازا اور خدمت خلق کے لیے ہمیشہ ہم تن گوش رہے۔ان کی کمی ہمیشہ محسوس کی جائے گی ،ان کی جگہ پر ہونا ممکن نہیں ہے۔
کل ان کی تدفین کھیڈ میں ہوگی۔