روہنگیائی پناہ گزینوں کی ضروریات زندگی میں حصہ لینا ملی فریضہ : غیور احمد قاسمی

15

جمعیة علماءہند نے برمی بچیوں میں جدید ملبوسات تقسیم کئے

نئی دہلی، (ورق تازہ نیوز) محتاجوں، غریبوں یتیموں اور ضرورت مندوں کی مدد اور حاجت روائی کرنا مذہب اسلام کا بنیادی سبق ہے۔ خالق کائنات اللہ رب العزت نے امیروں کو اپنے مال میں سے غریبوں کو دینے کا حکم دیا ہے، صاحب استطاعت پر واجب ہے کہ وہ مستحقین کی مقدور بھر مدد کرے۔ محسن انسانیت نبی کریم محمد صلی اللہ علیہ وسلم نے نہ صرف حاجت مندوں کی حاجت روائی کرنے کا حکم دیا بلکہ عملی طور پر آپ صلی اللہ علیہ وسلم خود بھی ہمیشہ غریبوں، یتیموں، مسکینوں اور ضرو رتمندوں کی مدد کرتے۔ آپ کا فرمان ہے کہ حاجت مندوں کی مدد کے لئے میں مدینہ کے ایک سرے سے دوسرے سرے تک جانے کے لئے تیار ہوں۔ ارشاد نبوی ہے ایک مسلمان دوسرے مسلمان کا بھائی ہے وہ نہ اس پر ظلم کرتا ہے اور نہ اسے بے یارومددگار چھوڑتا ہے اورجو شخص اپنے کسی مسلمان بھائی کی ضرورت پوری کرتا ہے اللہ تعالیٰ اس کی حاجت روائی فرماتا ہے۔جو شخص کسی مسلمان کی سترپوشی کرتا ہے اللہ تعالیٰ قیامت کے دن سترپوشی فرمائے گا۔
دہلی واطراف دہلی میں رہ رہے برمی مہاجرین کی خبر گیری میں جمعیة علماءہند روز اوّل سے ہی مصروف ہے عالمی پلیٹ فارم پر ان کے حقوق کے لئے تنظیم کے جنرل سکریٹری مولانا سید محمود مدنی پوری قوت کے ساتھ آواز بلند کرتے رہتے ہیں اور جمعیة علماءہند کے خدام ان کے کیمپوں میں جاکر ضروریات معلوم کرکے پوری کرنے کی کوشش کرتے رہتے ہیں اسی سلسلہ میں رمضان المبارک سے قبل گرمیوں کے کپڑے بچیوں میں تقسیم کئے دوسو بچیوں میں جدید ملبوسات کی پہلی کھیپ تقسیم کی گئی اور خواتین میں 100 ساڑیاں دی گئی، شرم وہار میں پچاسی خاندان قیام پذیر ہیں، نوح نگلی میں برمی مہاجرین کو پینے کا پانی خریدنا پڑتا ہے۔
مولانا غیو راحمد قاسمی نے کہا کہ شدید گرمی میں ان حضرات کے لئے ٹھنڈے پانی کا نظم ضروری ہے۔ نوح کے آس پاس کے مخیر حضرات ان حضرات کی خصوصی مدد وتعاون کریں۔ رمضان المبارک سے قبل ان لوگوں کے لئے افطار وسحری، شربت، پھل فروٹ کا نظم ہونا بہت ضروری ہے ائمہ کرام وذمہ داران مدارس ومخیر حضرات انکے کیمپوں میں جاکر ضروریات معلوم کریں اور دعوت وتبلیغ کے ذمہ داران ان کے پاس تین روزہ جماعت روانہ کریں تاکہ ان کے اعمال وعقائد درست ہوسکیں اور ہمارے لئے بلندی درجات ورضا الہی کا سبب بن سکے۔