راشٹروادی کانگریس پارٹی کا 12 نومبر کو زبردست احتجاجی مورچہ

0 6
ٹورینٹ جیسی عفریت مسلط کرنے والا حکمران ٹولا اس وقت پھر سے پرانی شراب نئی بوتل میں لایا ہے ۔ خالد گڈو
بھیونڈی ( شارف انصاری):- بھیونڈی کارپوریشن کے 13 نومبر کو ہونے والے جنرل اجلاس میں شہر کی گھر پٹی اور نل پٹی کا ٹھیکہ پرائیوٹ کمپنی کو سونپنے کی تجویز پیش کی جانے والی ہے جس کی شدید مخالفت کرتے ہوئے 12 نومبر کو راشٹروادی کانگریس پارٹی نے زبردست احتجاجی مورچہ نکالنے کا اعلان کیا ہے ۔ اس ضمن میں آج بھیونڈی راشٹروادی کانگریس پارٹی کے صدر خالد گڈو نے پریس اعلانیہ جاری کرتے ہوئے کہا ہے کے بھیونڈی کی مندی اور معاشی تنگدستی ہر شخص کے سامنے کھلی کتاب کی طرح عیاں ہے۔ پاورلوم کا مانچیسٹر کہلانے والا شہر آج بے روزگاری کا بری طرح شکار ہے۔کسی زمانے میں اپنے خزانے میں کروڑوں روپئے جمع رکھنے والا بھیونڈی شہر آج قرضوں کے بوجھ تلے دبا کچلا اپنے ہی شہریوں کی فلاح و بہبود پر خرچ کرنے سے قاصر ہے۔ راشٹروادی صدر خالد گڈو نے حکمراں جماعت کے خلاف مورچہ کھولتے ہوئے کہا ہے کے آج تاریخ کے سب سے اذیت ناک دور سے گزرنے والے بھیونڈی شہر کی سماجی،معاشی اور معاشرتی حالت کودیکھ کر ہر کسی کو رحم آتا ہے اگر رحم نہیں آتا تو صرف بھیونڈی مونسپل کارپوریشن کے اقتدار میں بیٹھے ہوئے نام نہاد حکمران افراد، یہ وہ افراد ہے جنہوں نے پہلے بھیونڈی کو بری طرح لوٹا کھسوٹا،اپنی جیب بھری،شہریوں کا بری طرح استحصال کیا،اپنے مفاد میں فیصلے کرکے یہاں کی عوام کو تباہی اور بربادی کے ایسے گڈھے میں دھکیل دیا جہاں صرف اذیت اور تکلیفیں انکا مقدر بن چکی ہے۔
صدر گڈو نے شہریوں سے اپیل کرتے ہوئے کہا کے میرے بھولے بھالے شہریوں بھیونڈی کاپوریشن کے یہیں مٹھی بھر مفاد پرست صاحب اقتدار افراد آج بھی اپنے گدھ نما پنجوں سے ایک مرتبہ پھر بھیونڈی کی عوام کو لوٹنے اور برباد کرنے کا منصوبہ بنارہے ہیں۔بھیونڈی کی عوام پر اپنے اقتدار کے دور میں ٹورینٹ جیسی عفریت مسلط کرنے والا یہ حکمران ٹولا اس وقت پھر سے پرانی شراب نئی بوتل میں لایا ہے، اب اسکی نظر آپ کی گھر پٹی اور نل پٹی پر ہے۔، شہر میں غیر قانونی تعمیرات رکی ہوئی ہے،کمیشن کا ہر دھندہ پوری طرح سے بند ہے ،بھیونڈی کے ٹوٹے پھوٹے اقتصادی حالات میں جب ان لوگوں کو کہیں سے آمدنی نہیں ہو رہی ہے تو یہ بھیونڈی کی بھولی بھالی عوام کی خون پسینے کی کمائی پر اپنی نظر گاڈھ کر اسے بھی لوٹنا چاہتے ہیں۔
آج تک ہماری گھر پٹی اور پانی پٹی کارپوریشن کے افسران وصول کیا کرتے تھے وقتا فوقتا ابھئے یوجنا جیسی کچھ اسکیموں کے زریعے عوام کو سہولیات بھی دی جاتی تھی مگر ٹورینٹ جیسی پرائیویٹ کمپنی سے بڑی رقم کمیشن میں وصول کرکے یہ مفاد پرست لوگ آپ کے خوابوں ،آرزوؤں اور مستقبل کو بیچ دینا چاہتے ہیں۔ خالد گڈو نے مزید بتایا کے مورخہ 13 نومبر کو بھیونڈی کے تمام شہریوں کی گھر پٹی اور پانی پٹی وصول کرنے کا ٹھیکہ پرائیویٹ کمپنی کو دیے جانے کا مسوودہ کارپوریشن کی جنرل بورڈ کی میٹنگ میں بحث کے لیے پیش کیا جانے والا ہے۔اگر یہ تجویز منظور ہوگئی ٹورینٹ کی طرح کی پرائیویٹ کمپنی آپ کے گھر میں گھس کر ایک ایک انچ کا ناپ لیکر آپ سے زبردستی پیسے وصول کریگی اورادا نہ کرنے کی صورت میں آپ پر جرمانہ اورایف آئی آر درج کی جانے والی ہے، شہریوں کے خلاف ہونے والی اس سازش کی ہمیں بھر پور مخالفت کرنی چاہیے اگر ہم نے متحد ہوکر اسکے خلاف آواز نہیں اٹھائی تو یہ مفاد پرست لوگ ہمارے بچوں کا مستبقل بھی کسی کو بیچ دیگے ، اس تجویز کی مخالفت کرنے کے لیے ،اپنے حق کی آواز بلند کرنے کے لیے مورخہ 12 نومبر ۲۰۱۸ کو دوپہر 3 بجے باغ فردوس مسجد ،حفیط پٹرول پمپ سے بھیونڈی مونسپل کارپوریشن تک ایک احتجاجی مورچہ نکالا جائیگا ، اس مورچہ میں کثیر تعداد میں شرکت کرکے اپنے غم اور غصہ کا اظہار کیجیے اور اپنے اور اپنے گھر والوں کا مستقبل مفاد پرست ٹولہ کے ہاتھوں میں جانے سے بچایئے ۔