راشٹروادی کانگریس میں دراڈ کے آثار،اجیت پوار قومی کنونشن سے ناراض ہوکر چلے گئے

682

نئی دہلی، ایجنسی۔ نیشنلسٹ کانگریس پارٹی (این سی پی) میں سب کچھ ٹھیک نہیں لگ رہا ہے۔ بڑے لیڈر اجیت پوار پارٹی سے ناراض دکھائی دے رہے ہیں۔ اس کی وجہ یہ ہے کہ مہاراشٹر کے سابق نائب وزیر اعلیٰ اجیت پوار نے پارٹی کے سرکردہ لیڈروں میں سے ایک ہونے کے باوجود اتوار کو این سی پی کے قومی کنونشن کے اجلاس سے خطاب نہیں کیا۔

وہ پارٹی سپریمو شرد پوار کے سامنے اجلاس کے درمیان میں ہی چلے گئے۔ درحقیقت وہ پارٹی لیڈر جینت پاٹل کو ان کے سامنے بولنے کا موقع دینے پر ناراض ہو گئے اور چند لمحوں بعد اجیت پوار سٹیج سے چلے گئے۔جس کی وجہ سے پارٹی میں دراڑ کی افواہیں پھیل گئیں۔ این سی پی کے رکن پارلیمنٹ پرفل پٹیل نے اسٹیج پر اعلان کیا تھا کہ اجیت پوار شرد پوار کے اختتامی تبصرے سے پہلے بات کریں گے لیکن سابق نائب وزیر اعلیٰ اپنی نشست سے غائب تھے۔

بعدازاں کارکنوں کو ناراض ہوتے دیکھ کر پرفل پٹیل نے اعلان کیا کہ اجیت پوار بیت الخلا جانے کے لیے اسٹیج سے نکل گئے ہیں اور وہ جلد ہی خطاب کے لیے واپس آئیں گے۔ اس دوران مشتعل کارکنوں نے مہاراشٹر کے سابق نائب وزیر اعلیٰ کی حمایت میں نعرے بازی شروع کر دی۔ اس کے بعد معاملہ بڑھتا دیکھ کر این سی پی ایم پی سپریہ سولے کو اجیت پوار کو منانے کے لیے بھیجا گیا۔ وہ اجیت کو اسٹیج پر تقریر کرنے کے لیے واپس آنے پر راضی کرتی نظر آئیں۔ لیکن جب اجیت پوار پنڈال میں داخل ہوئے تو شرد پوار نے اپنی اختتامی تقریر شروع کر دی تھی۔ جس کے بعد اجیت کو بولنے کا موقع نہیں ملا۔