راجہ سنگھ کے خلاف سخت کاروائی کاپاکستان کامطالبہ

602

اسلام آباد:(ایجنسیز) پاکستان نے پیغمبر اسلامؐ کے خلاف تلنگانہ کے معطل بی جے پی رکن اسمبلی ٹی راجہ سنگھ کے ریمارکس کی چہارشنبہ کے دن مذمت کی۔ اس نے حکومت ِ ہند سے مطالبہ کیا کہ وہ بی جے پی قائدین کی طرف سے مسلمانوں کے جذبات کو ٹھیس پہنچانے والے آئے دن کے بیانات کی روک تھام کے لئے فیصلہ کن کارروائی کرے۔

اسلام آباد میں دفتر خارجہ نے ایک بیان میں کہا کہ گزشتہ 3 ماہ میں دوسری مرتبہ بی جے پی کے ایک سینئر قائد نے پیغمبراسلام ؐ کی شان میں گستاخی کی ہے جس سے پاکستان کے عوام اور دنیا بھر کے کروڑہا مسلمانوں کے جذبات کو ٹھیس پہنچی ہے۔

دفتر خارجہ نے یہ بھی کہا کہ بی جے پی نے راجہ سنگھ کے خلاف جو علامتی کارروائی کی ہے اس سے مسلمانان ِ ہند اور مسلمانان ِ عالم کے دکھ کا مداوا نہیں ہوسکتا۔ یہ بات انتہائی قابل مذمت ہے کہ راجہ سنگھ کو گرفتاری کے چند گھنٹوں میں ضمانت پر رہا کردیا گیا۔پاکستان نے حکومت ِ ہند سے مطالبہ کیا کہ وہ فوری اور فیصلہ کن کارروائی کرے۔ سخت مذہبی بیانات کے لئے جانے جانے والے راجہ سنگھ کو حیدرآباد پولیس نے منگل کے دن گرفتار کیا تھا۔ بی جے پی نے اسے معطل کردیا۔ گرفتاری کے چند گھنٹے بعد اسے مقامی عدالت میں پیش ہونے سے قبل ہی ضمانت مل گئی تھی۔