نئی دہلی: دہلی میں ہنومان جینتی کے موقع پر ہفتہ کے روز جہانگیرپوری علاقہ میں دو فرقوں کے درمیان تشدد بھڑک اٹھا۔ این ڈی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق ہنومان جینتی کے موقع پر نکالے گئے جلوس کے دوران پتھراؤ کیا گیا، جس کے بعد کافی ہنگامہ آرائی ہوئی۔ رپورٹ کے مطابق جھڑپ کے دوران پولیس اہلکار سمیت کئی افراد زخمی ہوئے ہیں۔ زخمیوں کو دہلی کے بابو جگجیون رام استپال میں داخل کرایا گیا ہے۔دہلی پولیس پی آر او کا کام سنبھال رہے ڈی سی پی انویاس رائے کا کہنا ہے کہ جہانگیر پوری میں جلوس کے دوران ہنگامہ ہوا ہے۔ وہیں مرکزی وزیر داخلہ امت شاہ نے دہلی پولیس کے خصوصی پولیس کمشنر (لا اینڈ آرڈر) دپیندر پاٹھک سے اس معاملہ میں بات کی ہے۔ انہوں نے تشدد کے پیش نظر ضروری اقدام اٹھانے کی ہدایت دی۔

این پولیس عہدیدار نے این ڈی ٹی وی کو بتایا کہ یہ ایک رواکتی جلوس تھا اور حفاظت کے لئے پولیس اہلکار تعینات تھے لیکن کشل سنیما ہال کے پاس جلوس کے پہنچتے ہی دو فرقوں میں جھڑپ ہو گئی۔ تشدد کو روکنے کی کوشش میں موقع پر موجود پولیس اہلکار زخمی ہو گئے۔ انہوں نے کہا کہ جلوس میں چل رہے لوگوں پر اوپر سے پتھربازی اور معمولی آگزنی کی اطلاع موصول ہوئی ہے۔ پولیس کے اعلیٰ عہدیداران موقع پر موجود ہیں اور حالات قابو میں ہیں۔پولیس افسر نے مزید کہا کہ اضافی فورسز کو تعینات کیا گیا ہے۔ اس وبال کے دوران کن پولیس اہلکاروں کو چوٹ لگی ہے اس کی تصدیق کی جا رہی ہے۔ واقعہ سے وابستہ کچھ ویڈیوز بھی منظر عام پر آئی ہیں، جن میں پتھربازی اور آگزنی کے بعد لوگوں کو بھاگتے ہوئے دیکھا جا سکتا ہے۔ دریں اثنا، ہیلمٹ پہنے ہوئے پولیس اہلکار حالت کو قابو میں کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔ ویڈیو میں کچھ نوجوان پتھراؤ کرتے ہوئے بھی نظر آ رہے ہیں۔

آگزنی کے پیش نظر دہلی فائر سروس کی 2 گاڑیاں بھی موقع پر پہنچ گئی تھیں، حالانکہ دہلی فائر سروس کے ڈائریکٹر اتل گرگ کا کہنا ہے کہ یہ واقعات کافی معمولی نوعت کے تھے، لہذا وہاں آپریشن روک دیا گیا ہے اور گاڑیوں کو واپس بلا لیا گیا ہے۔ آگ لگنے سے کئی گاڑیوں کو نقصان پہنچا ہے اور دھویں کے غبار کے درمیان سینکڑوں افراد نظر آ رہے ہیں۔دریں اثنا، دہلی کے وزیر اعلی اروند کیجریوال نے کہا کہ تمام لوگوں کو امن برقرار رکھنا ہوگا۔ امن کے بغیر ملک ترقی نہیں کر سکتا۔ سب کو امن و امان برقرار رکھنا ہے۔ ضرورت پڑی تو ایجنسی ہے، پولیس ہے، جن کی ذمہ داری ہے۔ دہلی میں امن و امان قائم کرنا مرکزی حکومت کی ذمہ داری ہے۔ میں عوام سے بھی امن برقرار رکھنے کی اپیل کرتا ہوں۔وہیں، دہلی پولیس کمشنر راکیش استھانہ نے کہا ہے کہ شمال مغربی ضلع میں حالات اب قابو میں ہیں۔ جہانگیر پوری اور دیگر حساس علاقوں میں اضافی نفری تعینات کر دی گئی ہے۔ سینئر پولیس افسران کو علاقے میں رہنے کو کہا گیا ہے اور نظم و نسق پر گہری نظر رکھنے کے ساتھ مسلسل گشت کی ہدایت دی گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہنگامہ آرائی کرنے والوں کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی۔ انہوں نے عوام سے کہا ہے کہ وہ سوشل میڈیا پر افواہوں اور فرضی خبروں پر کان نہ دھریں۔