دہرادون: رشبھ پنت کو آئی سی یو سے نجی وارڈ میں شفٹ کیا گیا

90

دہرادون: سڑک حادثے میں زخمی ہونے کے بعد میکس اسپتال میں داخل ہندوستانی وکٹ کیپر بلے باز رشبھ پنت کو حالت بہتر ہونے کے بعد انہیں انتہائی نگہداشت یونٹ (آئی سی یو) سے نجی وارڈ میں منتقل کر دیا گیا ہے۔ ای ایس پی این کرک انفو نے پیر کو ذرائع کے حوالے سے یہ اطلاع دی۔

پنت 30 دسمبر کو اتراکھنڈ کے روڑکی میں اپنی والدہ سے ملاقات کے لئے جا رہے تھے اسی دوران ان کی کار ایک ڈیوائیڈر سے ٹکرا گئی۔ وہ معجزانہ طور پر کار میں لگنے والی آگ سے بچ گئے، حالانکہ اس حادثے میں ان کے گھٹنوں، پیروں اور ایڑی میں چوٹیں آئیں۔

پنت کو یہاں میکس اسپتال میں داخل کرایا گیا ہے اور ان کا علاج بورڈ آف کنٹرول فار کرکٹ ان انڈیا (بی سی سی آئی) کی میڈیکل یونٹ اسپتال کے تعاون سے کر رہا ہے۔

خیال رہے کہ پنت کے دماغ اور ریڑھ کی ہڈی کا اسکین 30 دسمبر کو ہی کرلیا گیا تھا، حالانکہ درد اور سوجن کی وجہ سے گھٹنے اور ٹانگوں کا اسکین اب تک نہیں ہو سکا ہے۔ ان کے زخموں اور پیشانی کی چوٹوں کے علاج کے لیے پلاسٹک سرجری کی گئی تھی، حالانکہ ایم آر آئی اسکین ہونا ابھی باقی ہے۔

بی سی سی آئی کو امید ہے کہ پنت اگلے دو سے تین دنوں میں چلنے کے لیے فٹ ہو جائیں گے اور بورڈ کے ڈاکٹر جلد سے جلد جڑواں لیگامینٹ کی چوٹ کا علاج شروع کر سکیں گے۔ اس وقت یہ معلوم نہیں ہے کہ چوٹ کو سرجری کی ضرورت ہوگی یا صرف ری ہیب کی ضرورت ہوگی۔ اس وجہ سے بورڈ کو نہیں معلوم کہ پنت کو میدان میں واپس آنے میں کتنا وقت لگے گا۔

ہندوستان کو فروری-مارچ میں آسٹریلیا کے خلاف بارڈر-گاوسکر ٹرافی اور ممکنہ طور پر انگلینڈ میں ورلڈ ٹیسٹ چیمپئن شپ (ڈبلیو ٹی سی) فائنل میں پنت کے بغیر جانا پڑ سکتا ہے۔ اس کے علاوہ اکتوبر میں ہندوستانی سرزمین پر ون ڈے ورلڈ کپ کا بھی انعقاد کیا جائے گا۔ پنت کے مکمل فٹ ہونے اور ورلڈ کپ میں کھیلنے کی بہت کم امید ہے، حالانکہ اس سے مکمل طور پر انکار نہیں کیا جا سکتا۔