نئی دہلی:ماحولیاتی کارکن دِشا روی کی گرفتاری پر ہنگامہ ہنوز جاری ہے اور اس سلسلے میں’میڈیا ٹرائل‘ کو لے کر آج دہلی ہائی کورٹ میں انتہائی اہم سماعت ہوئی۔ دشا کے وکیل نے عرضی میں کہا تھا کہ ’میڈیا ٹرائل‘ پر پابندی لگائی جائے کیونکہ اس سے دشا کی شبیہ خراب ہو رہی ہے۔ ہائی کورٹ نے سماعت کے دوران میڈیا ٹرائل روکنے سے انکار کر دیا، لیکن یہ ضرور کہا کہ اس معاملے کو سنسنی خیز بنا کر پیش نہ کیا جائے، اور ایسی خبریں نہ دکھائی جائیں جس سے جانچ اور ملزم کے حقوق متاثر ہوں۔

دشا کی عرضی پر سماعت کرتے ہوئے دہلی ہائی کورٹ نے دہلی پولس کے ساتھ ساتھ میڈیا کو متنبہ بھی کیا۔ ہائی کورٹ نے اپنے عبوری حکم میں کہا کہ میڈیا احتیاط کے ساتھ یہ یقینی کرے کہ معاملے میں جو بھی رپورٹ نشر ہوں، وہ قابل اعتبار ذرائع سے ہوں۔ ساتھ ہی ادارتی ٹیم یہ یقینی کرے کہ نشر ہونے والا مواد مصدقہ ہو۔ دہلی پولس سے ہائی کورٹ نے کہا کہ اسے اپنی چارج شیٹ پر قائم رہنا چاہیے، ایسا نہ ہو کہ پہلے کی چارج شیٹ اور بعد میں پولس کی بات میں فرق نظر آنے لگے۔ اس معاملے میں اب آئندہ سماعت کے لیے 17 مارچ کی تاریخ مقرر کی گئی ہے۔