درخواست گزار نے سپریم کورٹ کے جج کوہی دہشت گرد کہہ دیا، عدالت نے کہا،جیل بھیجوں گا تو سمجھ جائیں گے

513

دہلی: ایک شخص نے سپریم کورٹ کے جج کو دہشت گرد کہہ دیا۔ سپریم کورٹ نے اس پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے رجسٹری کو انہیں وجہ بتاؤ نوٹس جاری کرنے کا حکم دیا۔

مدعی کی طرف سے لگائے گئے الزامات کو اشتعال انگیز قرار دیتے ہوئے، چیف جسٹس آف انڈیا ڈی وائی چندر چوڑ اور جسٹس ہیما کوہلی کی بنچ نے کہا، ‘آپ کو کچھ مہینوں کے لیے جیل بھیجنا پڑے گا، پھر آپ کو احساس ہو جائے گا’۔

سپریم کورٹ کی بنچ نے اس شخص کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا، ‘آپ سپریم کورٹ کے جج پر صرف الزام نہیں لگا سکتے۔’ سپریم کورٹزیر التواء سروس معاملے میں ایک شخص کی درخواست کی سماعت کر رہا تھا۔ درخواست گزار کی جانب سے پیش ہونے والے وکیل نے کہا کہ جب وہ معافی مانگیں گے تب ہی وہ ان کی نمائندگی کریں گے۔ اس شخص نے کہا، ‘میں معافی چاہتا ہوں۔’ انہوں نے کہا کہ وہ اس وقت بہت زیادہ نفسیاتی تھے۔