• 425
    Shares

سماجی رابطوں کی ویب سائٹس پر ایک شامی نوجوان کی بہادری کے چرچے ہیں جس نے ایک شیر خوار الجزائری بچے کی جان بچاتے ہوئے اپنی جان دے دی۔

دمشق سے تعلق رکھنے والے 26 سالہ فادی مدرونی الجزائر کی ریاست وھران میں ایک معمولی سے فلیٹ میں رہائش پذیر تھا جہاں وہ محنت مزدوری کی غرض سے آیا تھا۔ مدرونی اپنے والدین کی اکلوتی اولاد تھا۔ اس نے ایک کم سن بچے کی زندگی بچاتے ہوئے اپنی جان کی قربانی دے کر خود کو امر کر دیا۔

تفصیلات کے مطابق مدرونی جس فلیٹ میں رہائش پذیر تھا اس کے سامنے ایک پڑوسی کے گھر میں گیس سیلنڈر کا دھماکہ ہوا۔ گھر میں تمام افراد بھاگ کھڑے ہوئے اور سیلنڈر سے لگنے والی آگ نے پورے مکان کو گھیرے میں لے لیا۔

آگ لگنے کے بعد پیدا ہونے والی بھگڈر میں ایک شیر خوار اندر رہ گیا مگر کوئی بھی بچے کو نکالنے کی ہمت نہیں کر پایا تو مدرونی نے جب کہ کیفیت دیکھی تو اس سے رہا نہ گیا اور وہ بھاگ کر آگ کی شعلوں میں گھرے گھر میں داخل ہو گیا۔ اندر داخل ہوتے ہی ایک شیر‌خوار بچے کی آواز سنائی دی۔ کوئی بھی اس بچے کی زندگی بچانے والا نہ تھا۔

اس نے آگ کے شعلوں سے لڑتے ہوئے دو سالہ شیر خوار کو نکال لیا مگر وہ خود اتنا جھلس گیا تھا کہ جان کی بازی ہار گیا۔

اس واقعے کی تفصیلات سوشل میڈیا پر وائرل ہونے کے بعد صارفین نے مدرونی کی وفات پر افسوس کا اظہار کیا ہے۔ سوشل میڈیا پر آنے والی تفصیلات کے مطابق فادی مدرونی دمے اور سانس کی تکلیف کا بھی شکار تھا۔ اس لیے وہ آگ اور دھواں برداشت نہ کر سکا اور دم توڑ گیا۔

ورق تازہ نیوز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں  https://t.me/waraquetazaonlineاور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔