خدا کی قدرت :3 دہائیوں قبل پانی میں ڈوبی مسجد دوبارہ اوپر آگئی : ویڈیو دیکھیں

5,822

نوادہ:5/ستمبرـ(ورق تازہ نیوز) بہار کے نوادہ میں 3 دہائیوں قبل پانی میں ڈوبی ایک مسجد ملی ہے۔ 30 سال تک پانی میں رہنے کے باوجود مسجد کو کوئی نقصان نہیں پہنچا۔ پھولواریہ ڈیم ناوادا کے راجولی ہیڈکوارٹر سے 5 کلومیٹر کے فاصلے پر واقع ہے۔ اس ڈیم کے قریب چندولی گاؤں کی مسجد 3 دہائیوں قبل پانی میں ڈوب گئی تھی۔ لیکن اب 30 سال بعد پہلی مرتبہ مسجد دیکھی گئی کیونکہ پانی مکمل طور پر سوکھ گیا تھا۔

https://youtu.be/gtB2DPDM74E

چنانچہ لوگ بڑی تعداد میں مسجد کو دیکھنے کے لیے جمع ہو گئے۔ آس پاس کے دیہاتوں میں یہ بات پھیل گئی کہ مسجد پانی سے باہر آگئی۔ اس لیے ضلع کے مختلف علاقوں سے مسلمان اپنے اہل خانہ کے ساتھ مسجد دیکھنے کے لیے یہاں پہنچے۔ یہ مسجد پچھلے کچھ دنوں سے خبروں میں ہے۔ کچھ نوجوانوں نے ہاتھ میں چپل لیے مٹی کے ذریعے مسجد میں داخل ہونے کی کوشش کی۔ لیکن کیچڑ اور پانی کی وجہ سے مسجد کے قریب جانا ممکن نہ تھا۔

مقامی لوگوں کے مطابق یہ مسجد 120 سال پرانی ہے اور گزشتہ 30 سال سے مکمل طور پر پانی میں ڈوبی ہوئی تھی۔ لیکن پھر بھی اتنے سالوں کے بعد بھی مسجد ویسی ہی ہے جو پانی کم ہونے سے پہلے حالت میں تھی۔ مسجد کو کسی قسم کا نقصان نہیں پہنچا۔ پھلواریہ ڈیم 1984 میں بنایا گیا تھا۔ اس وقت اس جگہ پر مسلمانوں کی بڑی تعداد آباد تھی۔

یہ ڈیم زمین کے حصول کے بعد تعمیر کیا گیا تھا۔ اس کے بعد مقامی لوگوں کو دوسری جگہ منتقل کر کے ہردیا ڈیم کے ساتھ والے گاؤں میں بسایا گیا۔ ڈیم کی تعمیر مکمل ہونے کے بعد مسجد کو چھوڑ دیا گیا۔ پانی بھرنے کے بعد مسجد مکمل طور پر ڈوب گئی۔ پانی کے اوپر صرف مسجد کا گنبد ہی دکھائی دے رہا تھا۔ لیکن اب پانی کی سطح کم ہونے کی وجہ سے مسجد لوگوں کو دکھائی دے رہی ہے۔