Waraqu E Taza Online
Nanded Urdu News Portal - ناندیڑ اردو نیوز پورٹل

خبردار! غرباء کو امداد دیتے وقت تصویرکشی یا ویڈیو گرافی پر دفعہ 188کے تحت سزا ہوگی: ضلع کلکٹر

IMG_20190630_195052.JPG
لاتور(محمدمسلم کبیر)ملک میں کورونا وائرس کی وباء سے عوامی زندگی بدحال ہوگئی ہے.مرض کے شدت سے پھیلنے کے وجوہات کی بناء پر حکومت نے پہلے 21 دن کا لاکڈاؤن کرکے عوام کو اپنے اپنے گھروں میں محتاط زندگی بسر کرنے کا اعلان کیا تھا تاہم اب حکومت نے لاکڈاؤن کی مدت میں  مزید اضافہ کرتے ہوئے 30 اپریل تک جاری رکھنے کااعلان کیا ہے.اس دوران کئی سماجی تنظیموں،انفرادی طور پر اس لاکڈاؤن میں بلا لحاظ مذہب و ملت،غرباء،مزدور ،یتیم اور بیواؤں پر بیروزگاری اور یومیہ غذا کے حصول میں پریشانی کو محسوس کرتے ہوئے انھیں اشیاء ضروری پر مبنی فوڈ پاکیٹس بطور امداد دستیاب کروا رہے ہیں.یہ انسانیت کو پروان چڑھانے والی بات ہے.لیکن بعض تنظیموں اور صاحب حیثیت افراد کن غرباء کو امداد کے دوران تصاویر، ویڈیو گرافی کرکے سوشیل میڈیا پر نشر کر رہے ہیں جس سے غرباء، بالخصوص غیرتمند خواتین و اصحاب کی دل شکنی اور غیریت پر سوال اٹھ رہے ہیں.اگرچیکہ یہ خاندان غریب ہیں لیکن چار آنا مدد کرکے بارہ آنا شہرت کرکے غریبی کا مذاق اڑانا کیا انسانیت کو شرمسار کرنے والی بات نہیں ہے.اسلام نے تو ریاکاری کو حرام قرار دیا ہے.latur
  لاتور ضلع کے کلکٹر جی.شریکانت نے آج ایک اعلامیہ جاری کرتے ہوئے کورونا وائرس کے تدارک کے لئے احتیاطی قوانین 1897 کے تحت 13/03/2020 سے لاتور ضلع میں احکامات جاری کئے ہیں.ان احکامات کے نفاذ میں کلکٹر کو یہ اختیارات حاصل ہیں کہ احتیاطی تدابیر میں بر موقع امتناعی احکامات جاری کر سکتے ہیں. اپنے اختیارات کا کستعمال کرتے ہوئے ضلع کلکٹر جی.شریکانت نے ضلع کے تمام سماجی، سیاسی، انفرادی اور گروہی طور پر عوام کو اشیاء ضروری کا تعاؤن کرتے وقت تصاویر، ویڈیو گرافی کرنا اور اس کی کسی بھی ذرائع سے تشہیر کرنے پر امتناعی احکامات جاری کرتے ہوئے سخت متنبہ کیا ہے کہ اگر اس طرح  کی کوشش کی گئی تو وبائی امراض احتیاطی تدابیر قانون 1897 کے  لحاظ سے ملے اختیارات کے تحت  تعزیرات ہند 1860 کے دفعہ 188 کے تحت سزا کے قابل سمجھا جائے گا. اس ضمن میں اعلامیہ میں کہا گیا ہے کہ کسی کی مدد کرکے اس  شہری کی خودداری ،عزت و عصمت کو ضرر پہنچانے کا اختیار کسی بھی شخص یا فرد کو نہیں ہے. چونکہ امداد کے دوران لئے جانے والے تصاویر اور ویڈیو کی تشہیر سے امداد کے جذبہ اور انسانیت کا جو مقصد ہے وہ فوت ہوجاتا ہے.اس لئے کسی بھی قسم کی مدد کرنا ہے تو بے لوث ہو کر کریں. مستحقین تک امداد پہنچانے میں انتظامیہ کا تعاون کرنے کی اپیل بھی ضلع کلکٹر نے کی ہے.