خبردار…! ریمیڈسیور انجکشن کی فراہمی اسپتال کی ذمّے داری۔۔۔۔رشتےداروں کو قطعاً ہراساں نہ کیا جائے۔۔ انتظامیہ کی سخت تنبیہ

لاتور (محمد مسلم کبیر) اس حقیقت کے باوجود کہ انتظامیہ کوویڈ اسپتال سے وابستہ ہر کویڈ سینٹر میں ریمیڈسیور انجیکشن فراہم کررہی ہے،بہت سارے اسپتالوں سے متعلقہ مریضوں کے لواحقین کو باہر سے ریمیڈسیور انجیکشن لانے پر مجبور کیا جا رہا ہے۔جو غلط بات ہے.ہسپتال ہی مریضوں کو انجیکشن فراہم کرنے کے ذمہ دار ہیں۔ اس تعلّق سے ضلعی انتظامیہ نے متنبہ کیا ہے اور اگر مریضوں کے لواحقین کو ریمیڈسیور باہر سے خرید کر لانے کے لئے بھیجاجاتا ہے تو ایسے اسپتالوں کے خلاف قانونی کارروائی کرنے کی ہدایت کی گئی ہے۔ریاستی حکومت کی طرف سے وقتا فوقتا آنے والی ہدایات کے مطابق ضلعی انتظامیہ اقدامات کررہی ہے۔اسی طرح ریمیڈسیور کے بلیک مارکیٹ کو روکنے کے لئے، ہر کوڈ کیئر سنٹر میں مریضوں کی تعداد کے مطابق ضلعی انتظامیہ ضرورت کے لحاظ سے ان اسپتالوں میں حسب ضرورت یہ انجیکشن فراہم کررہی ہے۔
یہاں تک کہ اس کی معلومات کو روزانہ میڈیا کے ذریعہ شائع کیا جارہا ہے۔ اس کے باوجود ، بہت سے اسپتال مریض کے رشتہ دار کو انجکشن باہر لانے پر مجبور کر رہے ہیں۔لہذا ایسے رشتے دار صبح سویرے کلکٹر آفس یا کلکٹر کی رہائش گاہ پہنچ جاتے ہیں تاکہ انجیکشن کی فراہمی کے بارے میں معلومات حاصل کی جاسکے۔ درحقیقت انتظامیہ یہ انجیکشن اسپتالوں کو فراہم کررہی ہے۔ فی الحال کورونا انفیکشن کی شرح زیادہ ہے۔ ضلع لاتور میں،مارچ کے بعد سے کورونا کے مریضوں کی تعداد میں تیزی سے اضافہ ہوا ہے۔ دن بہ دن بڑھتی شرح کے مدّ نظر ہر طرف تشویش کا ماحول ہے۔سرکاری اسپتالوں اور نجی اسپتالوں میں بستروں کی عدم دستیابی کی وجہ سے مریض اور ان کے لواحقین بھی پریشانی کا شکار ہیں۔ اور وہ دل شکستہ ہیں۔انتھک کوشش کے بعد مریض کو بستر مل گیا تو اس کے بعد ڈاکٹر علاج کا عمل شروع کرتا ہے۔پھر ایکس رے ، پیشاب ، بلڈ ٹسٹ وغیرہ کی جانچ کرنے کے بعد ریمیڈسیور انجیکشن پوچھا جاتا ہے اور مریض کے لواحقین کو ہراساں کرنے لگتے ہیں۔ایسا نہیں ہونا چاہئے،تا کہ علاج معالجے کی بلیک مارکیٹنگ نہ کی جائے ، لہذا حکومت کویوڈ کیئر سنٹر کے ساتھ منسلک میڈیکل اسٹور پر حکومت کی طرف سے ریمیڈسیور انجیکشن لے جائے گی اور ڈاکٹروں کو اپنے مریضوں کے لیےاسی اسٹور سے حاصل کرنا ہوگا۔فی الحال، ریمیڈیسورکا مطالبہ زیادہ ہے اور ایسے ماحول میں اسپتالوں کو مریضوں کے لواحقین کو انجیکشن کی خریداری کے لئے باہر نہیں بھیجنا چاہئے۔ اگر ایسے کسی واقعہ کی صورت میں،متعلقہ اسپتال کے خلاف ڈیزاسٹر مینجمنٹ ایکٹ کے تحت کارروائی کی جائے گی۔

Md.Muslim Kabir,
Latur Dist.Correspondent,
Urdu Media
9175978903/9890065959
alkabir786