جلگاوں (نامہ نگار)ذرائع موصول خبر کے مطابق دھولیہ ضلع کے شیندکھیڈا تعلقہ کےنیمگوڑ گاوں کی سشیلا باگل ان کا سورت کے اسپتال میں دوران علاج ندھن ہوا ،اسی دواخانے میں شبانہ انصاری ان کا بھی انتقال ہوا ،لیکن اسپتال کے انتظامیہ کی جانب سے نامعلوم طریقہ کار پیش آیا ،شبانہ کی نعش سشیلا بائ ان کے اہل خانہ کو دی گئ۔میت کا انتم سنسکار کرنے کے بعد باگل فیملی گاوں واپس آگئیں ۔اس کے بعد پھر سے نعش لینے کےلۓ بلایاگیا۔

اس سنگین معاملے کے تعلق سے متوفی شبانہ ان کےگھر والوں کی شکایت پر تینوں کے خلاف کھٹودرا پولیس اسٹیشن میں کیس درج کیاگیا ہے۔دونڈائچہ سے قریب نیمگوڑ گاوں کی سشیلا دتاترے باگل (عمر ٥٨) انھیں کورونا کی علامتوں کے مرض جیسی علامتیں معلوم ہونے کے بعد انھیں سورت منتقل کیا گیا تھا۔

مجوراگیٹ علاقہ کے نیو سول اسپتال میں ان کا علاج کیا جارہا تھا۔اسی اسپتال میں سورت کے سید پورا علاقہ کی رہائش پذیر شبانہ محمد انصاری (عمر ٤٠) انھیں بھی داخل کیاگیاتھا۔بد قسمتی سے گذشتہ سنیچر کے روز سشیلا بائ اور شبانہ ان دونوں کی موت واقعہ ہوگئیں۔اسی اسپتال کی جانب سے کورونا متاثرین کی میتوں کی آخری رسومات کی ادائیگی کی ذمداری "خان ٹرسٹ نامی ادارے کو دی ہوئ ہیں۔دونوں کی میت کی خبر دونوں کے گھر والوں کو دی گئ۔اس کے بعد باگل خاندان نے نعش کا مطالبہ کرنےپر نامعلوم لاپرواہی سے شبانہ کی نعش سونپ دی گئیں۔جبکہ شبانہ کے اہل خانہ کو روک کر رکھا گیا۔

اس کے بعد اسپتال کے قریب برقی لاش داہنی میں دہن کیا گیا۔اس واقعہ کے بعد باگل خاندان اپنے گاوں لوٹ گۓ۔دوسرے دن اتوار کو اسپتال میں شبانہ کی میت کا مطالبہ اہل خانہ نے کیا۔جب تک یہ سنگین معاملہ اسپتال انتظامیہ کے سمجھ میں آگیا تھا۔انھوں ٹال مٹول کرنے کی کوشش کی۔آخر کار انصاری خاندان کو سارے معاملے کا علم ہوچکا تھا۔اس وقت شبانہ ان کے بیٹے ،بہین ،بھائ ان کا غم سے نڈھال رنج و غم کا اظہار شروع ہوا ، انھوں نے اشکبار ہوکر اسپتال سے جواب طلب کیا۔ایک طرف انصاری فیملی کو سمجھانا تو دوسری جانب سشیلابائ کی نعش گھر میں موجود نعش لیجانے کےلۓ انتظامیہ باگل خاندان کے مسلسم رابطے میں تھا۔اس موصول خبر کے بعد باگل خاندان پھر سے سورت پہونچ گیا۔اس کے بعد سشیلابائ ان کا انتم سنسکار کردیا گیا۔جبکہ اس واقعہ کے بعد کھٹودرا پولیس اسٹیشن میں متوفی شبانہ انصاری ان کا بیٹا عاقب محمد سلیم انصاری ،اس نے شکایت کرنےپر تینوں کےخلاف کیس درج کرلی گئ۔پولیس نائب انچارج کومل دیسائ ان کو معاملے کی جانچ سونپی گئ ہے۔

اس واقعہ کے بعد اسپتال انتظامیہ نے سہ رکنی کمیٹی تشکیل دی ہیں۔اس میں ڈاکٹر گنیش گوڑیکر ،ڈاکٹر صمیہ ملا ،ڈاکٹر ہری میمن شامل ہیں۔یہ جانچ کمیٹی ایک ہفتے کے اندر اپنی رپورٹ پیش کریں گی۔ نیو سول اسپتال کےسپرٹنڈنٹ ڈاکٹر ایس۔ایم پٹیل انھوں نے ذرائع کو دی۔