راکیش ٹکیت نے اپنے ایک بیان میں کہا کہ ’’مرکز نے کسانوں کے لیے قانون بنایا ہے جو انھیں (کسانوں کو) ہی منظور نہیں تو حکومت انھیں واپس لے۔ حکومت کی ایسی کیا مجبوری ہے جو قانون واپس نہیں لے رہی۔‘‘کانگریس رکن پارلیمنٹ راہول گاندھی نے 12 فروری کو لوک سبھا میں اپنی تقریر کے دوران مرکز کی مودی حکومت پر کئی طرح کے الزامات عائد کیے تھے جن میں سے ایک الزام یہ تھا کہ اس ملک کی حکومت کو 4 لوگ چلاتے ہیں اور جو بھی ہو رہا ہے ان چار لوگوں کے لیے ہی ہو رہا ہے۔ انھوں نے اپنی تقریر میں ’ہم دو، ہمارے دو‘ سلوگن بھی پیش کیا تھا اور کہا تھا کہ اب اس سلوگن کا مطلب بدل گیا ہے۔ راہل گاندھی کے اس الزام کی کسان لیڈر راکیش ٹکیت نے تائید کی ہے اور انھوں نے کہا ہے کہ ’’ہاں، بالکل یہی لگ رہا ہے کہ چار ہی آدمی ہیں جو ملک چلا رہے ہیں۔‘‘راکیش ٹکیت نے میڈیا کے سامنے راہول گاندھی کے بیان پر اپنا رد عمل ظاہر کرتے ہوئے اس بات کا اظہار کیا۔ ساتھ ہی انھوں نے کہا کہ اپوزیشن کو کسان مسئلہ پر پارلیمنٹ میں بحث کرنی چاہیے۔


اپنی رائے یہاں لکھیں