ٹیکس قانون کے نفاذ کا مقصد فوت ہونے پر افسوس کا اظہار

نئی دہلی : سپریم کورٹ نے ملک میں ’ون نیشن ون ٹیکس‘ کے تصور کے تحت شروع کیا گیا ٹیکس نظام ’گڈس اینڈ سرویسز ٹیکس‘ (جی ایس ٹی) کو لاگو کرنے کے طریقوں پر ناراضگی کا اظہار کیا۔ سپریم کورٹ نے کہاکہ ٹیکس نظام اپنے مقصد سے بھٹک گیا ہے۔ جسٹس ڈی وائی چندر چوڑ کی بنچ نے کہاکہ پارلیمنٹ کا منشاء تھا کہ جی ایس ٹی شہریوں کے لئے آسان ٹیکس نظام ہو، لیکن جس طرح سے اس کو پورے ملک میں نافذ کیا جارہا ہے اس سے اس کا مقصد فوت ہورہا ہے۔ ہماچل پردیش جی ٹی ایس کی ایک شق کو چیلنج کرنے والی عرضی پر سماعت کے دوران عدالت نے کہاکہ ٹیکس افسر ہر تاجر کو دھوکے باز نہیں کہہ سکتا۔ واضح رہے کہ اپوزیشن ابتداء سے حکومت پر الزام لگارہا ہے کہ جی ایس ٹی کو غلط طریقہ سے لاگو کیا گیا ہے جس کی وجہ سے تاجرین پریشان ہیں۔ تاجروں میں بھی نئے نظام میں موجود خامیوں کو لے کر کافی برہمی ہے۔


اپنی رائے یہاں لکھیں