جھوٹے ذات کا سرٹیفکیٹ کی بنیاد پرایٹراسٹی کامقدمہ درج کروانے والے شخص کے خلاف ہی دھوکہ دہی مقدمہ درج ہوگا

ناندیڑ:8 مارچ(ورق تازہ نیوز) مکھیڑ پولیس نے جعلی ذات کا سرٹیفکیٹ استعمال کرکے شخص کے خلاف ایٹروسیٹیز ایکٹ کے تحت جرم درج کرنے والے شخص کے خلاف ہی دھوکہ دہی کا مقدمہ درج کیا ہے۔گنپت گنگارام انپل واڑ نے سدھاکر ہنمنت ٹیکالے کے خلاف ایٹروسیٹی ایکٹ کے تحت مقدمہ درج کرایا تھا۔ اس کے بعد سدھاکر ٹیکالے نے 30 اپریل 2019 کو تحصیل دفتر میں حق اطلاعات قانون کے تحت گنپت انپل واڑ کا ذات کا سرٹیفکیٹ حاصل کرنے کے لیے درخواست دی۔

اس مطالبے کو ماننے کے لیے انہیں تحصیل آفس مکھیڈ میں دھرنا دینا پڑا۔ اس کے بعد تحصیل آفس نے سدھاکر ٹیکالے کو مطلع کیا کہ سرٹیفکیٹ نمبر JCR No.1991/HUTS/CR110/92 مورخہ 28/07/1991 تحصیل آفس مکھیڑ نے جاری نہیں کیا ہے۔ جسکے مطابق، 27 مئی 2019 کو گنپت انپل واڑ کے خلاف سدھاکر ہنمنت ٹیکالے نے جھوٹا اور فرضی مہادیو کولی کا ذات کا سرٹیفکیٹ دکھا کر جو ظلم کیا تھا، وہ غلط ہے، جعلی کاسٹ سرٹیفکیٹ بنا نے کے معاملے میں مکھیڑعدالت نے مکھیڑپولیس کوہدایت دی کہ دھوکہ باز شخص کے خلاف تعزیرات ہند کی دفعہ 420، 467 اور 471 کے تحت الزامات درج کریں ۔عدالت کا یہ بھی کہنا تھا کہ انہوں نے جعلی سرٹیفکیٹ بنائے اور حکومت کو دھوکہ دیا۔ مکھیڑ پولیس نے اس سلسلے میں مقدمہ 72/2022 درج کرلیا ہے۔ اس جرم کی تفتیش مکھیڑ کے پولس انسپکٹر وی وی گوبادے کررہے ہیں۔