نیشنل کانفرنس کے نائب صدر اور سابق وزیر اعلیٰ عمر عبداللہ کا دعویٰ ہے کہ حکام نے انہیں اپنے خاندان بشمول والد ڈاکٹر فاروق عبداللہ سمیت اتوار کے روز خانہ نظر بند رکھا۔انہوں نے الزام لگایا کہ ان کے گھر میں کام کرنے والے اسٹاف کو بھی اندر داخل ہونے کی اجازت نہیں دی گئی۔ انہوں نے ان باتوں کا اظہار اتوار کے روز اپنے سلسلہ وار ٹویٹس میں کیا، جن میں سے ایک ٹوئٹ کے ساتھ ایک تصویر بھی پوسٹ کی گئی ہے جس میں پولیس گاڑیوں کو ان کی گپکار میں واقع رہائش گاہ کے مین گیٹ کے باہر کھڑی دیکھی جاسکتی ہیں۔


اپنی رائے یہاں لکھیں