ریاض : سعودی صحافی جمال خاشقجی تین برس قبل استنبول کے سعودی قونصل خانے گئے اور واپس باہر نہیں نکلے تھے۔ ان کی منگیتر خدیجہ چنگیز اب بھی جمال خاشقجی کے لیے انصاف کی طلب گار ہیں۔ خدیجہ چنگیز سعودی قونصلیٹ استنبول میں قتل کر دیے جانے واشنگٹن پوسٹ کے صحافی اور سعودی حکومت کے ناقد جمال خاشقجی کی منگیتر ہیں۔ سن 1918 میں جمال خاشقجی کے قتل کے بعد سے انہوں انصاف کے لیے سعودی حکومت بالخصوص ولی عہد پرنس محمد بن سلمان کے خلاف 2018 سے مہم جاری رکھی ہوئی ہے۔ وہ گزشتہ تین سال سے ترکی، امریکہ اور یورپین یونین میں تقاریر کا سلسہ جاری رکھے ہوئے ہیں۔ انہوں نے اپنے برسلز کے حالیہ دورے میں ڈی ڈبلیو اردو سے بات کرتے ہوئے کہا کہ آج تین سال ہوگئے اور جمال کے قاتلوں کو کچھ نہیں ہوا، اب جب کے تمام شواہد واضح ہوچکے ہیں اس پر اب کارروائی ہونی چاہیے، میں یورپی لیڈروں سے کہنا چاہتی ہوں کہ وہ کراؤن پرنس کے خلاف ایکشن لیں اور اس کو مزید موقع نہ دیں تاکہ کسی دوسرے صحافیوں کی جان بچائی جا سکے، کراؤن پرنس کا بائیکاٹ ہونا چاہیے، میں صرف انصاف کی متقاضی ہوں-

ورق تازہ نیوز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں  https://t.me/waraquetazaonlineاور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔ 


اپنی رائے یہاں لکھیں