جلگاوں :بی جے پی کے سابقہ کارپوریٹرپاٹل پرفائرئنگ

0 17

جلگاوں (نامہ نگار) سال نو کی شروعات سے قبل سیاسی رنجش کے سبب جلگاو¿ں میں خاتون کارپویٹر اوشا پاٹل (بی جے پی) کے شوہر و سابق کارپویٹر شنتوش اپا موتی لال پاٹل پر نامعلوم مسلح افراد نے فائرنگ کردی۔جس میں پاٹل شدید طور پر زخمی ہوئے ہیں۔اس وقت ان کا علاج جلگاوں کے ایک نجی اسپتال میں جاری ہے۔تاہم جلگاو¿ں تعلقہ پولیس معاملے کا اندراج کرنے میں مصروف ہے۔واقعہ کی خبر شہر بھر میں جنگل میں آگ کے معنی پھیل گئی ہے۔ جس کے بعد پاٹل حمایتیوں اور شہریوں کی بھیڑ ضلعی سرکاری اسپتال کے باہر دیکھنے کو ملی ۔تا ہم حملہ آور فرار ہیں لیکن پولیس نے جائے واردت سے پستول ،گولی وغیرہ برآمد کرلی لے۔اس وقت سابق کارپویٹر شنتوش پاٹل کا شہر کے سہیوگ اسپتال میں علاج جاری ہے۔جبکہ ابتدائی علاج ضلعی سرکاری اسپتال و میڈیکل میں ہوا۔موصولہ تفصیلات کے مطابق یہ واقعہ صبح ساڑھے دس بجے اس وقت پیش آیا جب شنتوش پاٹل اپنے گھر سے گرنا ندی کے پاس واقعہ ان کھیت کی طرف جارہے تھے۔راستے میں سوکھیڑا علاقے کے آئرن پارک کے پاس پچھے سے آئے موٹر سائیکل سوار حملہ آوروں نے ان پر فائرنگ کردی۔جس میں پاٹل کے سینے کے دائیں باوز پر ایک گولی لگی ہے۔

موقع واردت سے قریب موجود لوگوں نے انہیں شدید زخمی حالت میں ضلعی میڈیکل کالج و سرکاری اسپتال میں داخل کروایا گیا اور فورا حادثے کی خبر ان کے لڑکے دیپک پاٹل کو بذریعہ فون دی۔سال نو کی شروعات سے ایک روز قبل ہوئی اس واردت سے شہر بھر میں سنسنی پھیل گئی ہے۔ادھر دوسری جانب واردت کو لے کر الگ الگ چہ مگئیوں کا بازار گرم ہے۔غیر مصدقہ اطلاع کے مطابق یہ حملہ سیاسی مخاصمت سے ہوا ہے۔پاٹل پر ہوئے حملے کے وقت موقع پر موجود لوگوں کا کہنا ہے کہ وہ گولی کی آواز سننے کے بعد متوجہ ہوئے اس سے پہلے کسی کو کچھ سمجھ میں آتا حملہ آور پوتدار اسکول کی طرف سے بھاگنے میں کامیاب ہوئے۔اطلاع کے مطابق جلگاو¿ں تعلقہ پولیس اسٹیشن کے عملے نے جائے واردت سے پستول ،تین گولیاں موٹر سائیکل وغیرہ برآمد کی ہے۔ذرائع ابلاغ سے سے گفتگو کرتے ہوئے شنتوش پاٹل کے لڑکے دیپک پاٹل نے کہا کہ "اس حملے کے پیچھے انہی کے خاندان کے لوگ ہو سکتے ہیں۔دیپک پاٹل نے ان کے اہل خاندان کے افراد نام بھی لیں۔”۔پولیس معاملے کی تحقیقات کررہے۔