انڈیا کا معروف فیشن برانڈ ’فیب انڈیا‘ سوشل میڈیا پر شدید تنقید کی زد میں ہے کیونکہ انہوں نے ’دیوالی‘ پر کپڑوں کی نئی رینج کا نام ’جشن رواز‘ رکھ دیا ہے۔
انڈیا میں دائیں بازو کی جماعتوں کے حامیوں کی تنقید کے بعد ’فیب انڈیا‘ نے اپنی ٹویٹ کو ڈیلیٹ کر دیا ہے، تاہم انڈیا میں صارفین اب بھی اس فیشن برانڈ کا بائیکاٹ کرنے کا مطالبہ کر رہے ہیں۔

اس حوالے سے شفالی ویدیا نے لکھا کہ ’فیب انڈیا‘ نے ہندوؤں کے مذہبی فیسٹول کو غیرہندو بنانے کی کوشش کی ہے۔
’اس کو آپ فیسٹول آف لو اینڈ لائٹ کہیں، اس کا نام جشن رواز رکھ دیں، ماڈلز کے ماتھے سے بندیا اتار دیں اور پھر بھی آپ امید رکھتے ہیں کہ ہندو آپ کے مہنگی پروڈکٹس خریدیں صرف انڈیا کے کلچر کو خراج تحسین پیش کرنے کے لیے۔‘

بائیکاٹ فیب انڈیا‘ ٹرینڈ کے پیچھے بھی انڈیا کی حکمران جماعت بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے اراکین نظر آتے ہیں۔

ہریانہ میں بی جے پی کے سوشل میڈیا ٹیم کے انچارج ارن یادیو نے ’بائیکاٹ فیب انڈیا‘ ٹوئیٹ کیا اور اپنے فالورز سے کہا کہ اس ری ٹویٹ کریں۔
عامر ہاشمی نامی صارف نے ایک ٹویٹ میں ’بائیکاٹ‘ کے ٹرینڈ کی مخالفت کرتے ہوئے لکھا کہ جو اس ہیش ٹیگ کو فروغ دے رہے ہیں، ان کے پاس نوکریاں نہیں ہیں اور نہ ان کی استطاعت ہے کہ ’فیب انڈیا‘ کی پراڈکٹس خرید سکیں۔

ورق تازہ نیوز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں  https://t.me/waraquetazaonlineاور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔