جامعہ الازہر کا فتوٰی: ’باجماعت نماز اور نماز جمعہ منسوخ ہو سکتی ہے‘

اسلام آباد:جامعہ الازہر مصر کی سپریم کونسل نے مصدقہ طبی معلومات اور انسانی زندگی کے تحفظ کے عظیم تر مقصد کو سامنے رکھتے ہوئے باجماعت نماز اور نماز جمعہ کی ادائیگی پر پابندی عائد کرنے کے حوالے سے باضابطہ فتویٰ جاری کردیا ہے۔فتوے میں کہا گیا ہے کہ تمام شواہد واضح طور پر اس امر کی نشاندہی کرتے ہیں کہ عوامی اجتماعات بشمول باجماعت نماز کورونا وائرس کے پھیلاو¿ کا باعث بنتے ہیں۔’اسلامی ممالک میں سرکاری حکام کو باجماعت نماز اور نماز جمعہ منسوخ کرنے کا پورا اختیار ہے۔ اس سلسلے میں درپیش حالات کو مدنظر رکھا جائے،

موذن حضرات کو (گھروں میں نماز ادا کریں) کے ساتھ ترمیم شدہ اذان دینی چاہیے جبکہ اہل خانہ اپنے گھروں میں باجماعت نماز ادا کر سکتے ہیں۔’مسلمانوں پر فرض ہے کہ وہ خاص طور پر بحران کی صورت حال میں طبی احتیاطی تدابیر کے حوالے سے مجاز ریاستی حکام کے احکامات کی پیروی کریں اور غیر سرکاری ذرائع سے اطلاعات اور افواہوں سے پرہیز کریں۔

♨️Join Our Whatsapp 🪀 Group For Latest News on WhatsApp 🪀 ➡️Click here to Join♨️

واضح رہے کہ صدر پاکستان ڈاکٹر عارف علوی نے پاکستان میں مصر کے سفیر کے ذریعے شیخ الازہر سے کورونا وائرس کی وبا کے سلسلے میں مذہبی فرائض کی ادائیگی سے متعلق رہنمائی کی درخواست کی تھی۔فتوے میں مزید کہا گیا ہے کہ ‘حالیہ کورونا کی وبا سے متعلق مصدقہ طبی معلومات ہیں کہ یہ وائرس بہت آسانی اور تیزی سے پھلیتا ہے، اور یہ کہ انسانی زندگیوں کو بچانا اور انہیں تمام خطرات سے محفوظ رکھنا اسلامی قوانین کے عظیم مقاصد میں سے ہے۔”ان مقاصد کی تکمیل کے لیے علما سپریم کونسل یہ فتوٰی جاری کرتی ہے کہ ہر اسلامی ملک میں ریاستی عہدے داروں کو اجازت ہے کہ وہ تمام عوامی اجتماعات بشمول باجماعت نماز اور نماز جمعہ پر وائرس کے پھیلاو¿ کو روکنے اور لوگوں کی اموات کے خدشے کے پیش نظر قانونی طور پر پابندی لگا سکتے ہی

WARAQU-E-TAZA ONLINE

I am Editor of Urdu Daily Waraqu-E-Taza Nanded Maharashtra Having Experience of more than 20 years in journalism and news reporting. You can contact me via e-mail waraquetazadaily@yahoo.co.in or use facebook button to follow me