امان : اردن کے فرمان روا شاہ عبداللہ نے قوم سے خطاب میں اپنے سوتیلے بھائی شہزادہ حمزہ کی جانب سے مبینہ بغاوت پر پہلی بار کھل کر بات کی۔ اردن کے 59 سالہ شاہ عبداللہ ثانی نے قوم سے اپنے خطاب میں بتایا کہ ان کے سوتیلے بھائی شہزادہ حمزہ کی جانب سے مبینہ بغاوت کی منصوبہ بندی کی کوشش کے بعد پیدا شدہ عدیم النظیر سیاسی بحران اب پوری طرح سے ختم ہوگیا ہے۔ حکام نے اردن کے سابق ولیعہد شہزادہ حمزہ پر ’’سلطنت کی سکیورٹی کو غیر مستحکم کرنے‘‘ کا الزام عائد کرتے ہوئے تقریباً 16 افراد کو گرفتار کرلیا تھا۔ تاہم سرکاری ٹیلی ویژن پر اپنے خطاب کے دوران شاہ عبداللہ نے کہاکہ شہزادہ حمزہ فی الوقت شاہی محل میں ہیں اور ان کا خیال رکھا جارہا ہے۔ انھوں نے کہاکہ ’’بغاوت ہمارے ایک گھر کے اندر سے ہی اُٹھی تھی، اس بغاوت کو سر اٹھانے سے پہلے ہی ختم کردیا گیا‘‘۔ ہمارا قابل فخر اردن محفوظ اور مستحکم ہے۔ گزشتہ چند روز کے دوران کا یہ چیلنج ہمارے ملک کے استحکام کے لئے کوئی بہت مشکل یا پھر خطرناک تو نہیں تھا تاہم میرے لئے یہ بہت ہی تکلیف دہ ضرور تھا۔


اپنی رائے یہاں لکھیں