مظفرآباد(پاکستان) : مظفرآباد میں زیادتی کی کوشش میں مزاحمت پر بہنوئی نے سالی کو قتل کر دیا،بعدازاں اپنی زندگی کا بھی خاتمہ کر لیا . تفصیلات کے مطابق تھانہ مظفرآباد کے علاقے میں زیادتی کی کوشش میں مزاحمت کرنے پر بہنوئی نے 18 سالہ سالی کو قتل کر کے خود کشی کر لی .

بستی لابر کے رہائشی 29 سالہ فہیم کی 8 سال قبل انیلا بی بی سے شادی ہوئی تھی. اس کا سسرال اسی کے گھر والی گلی میں ہے.گذشتہ روز اس کی بیوی انیلا کی طبعیت خراب تھی.جس پر اس نے اپنی بہن کو ثانیہ کو کپڑے دھونے کے لیے بلا لیا.فہیم نے بہانے سے اپنی بیوی کو گھر سے باہر بھیج دیا اور ثانیہ سے زیادتی کی کوشش کی.مزاحمت کرنے پر فہیم نے ثانیہ پر فائرنگ کر دی جو زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے موقع پر ہی دم توڑ گئی،سالی کو قتل کرنے کے بعد ملزم نے خود کوبھی گولی مار کر زندگی کا خاتمہ کر لیا. دونوں لاشوں کو تحویل میں لے کر اسپتال منتقل کیا گیا.پولیس کے مطابق مقتولہ ثانیہ کے جسم پر زخموں کے نشانات ییں جب کہ اس کے ناخنوں میں فہیم کے بال پائے گئے.بعض رپورٹس میں یہ بھی بتایا گیا کہ لڑکی نے اپنی بہن کو بتایا کہ بہنوئی نے میرے ساتھ زیادتی کی کوشش کی.

جس پر فہیم نے طیش میں آکر اپنی سالی کو مارا اور پھر اپنی زندگی کا بھی خاتمہ کر لیا. دوسری جانب 20 سالہ لڑکے نے دس سالہ معصوم بچی کو زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا.کراچی کے علاقے ابراہیم حیدری کے حسن الیاس گوٹھ میں دس سالہ معصوم بچی کو زیادتی کا نشانہ بنادیا گیا. مقامی لوگوں نے 20 سالہ لڑکے سعید کمال کو پکڑ کر پولیس کو اطلاع کی. مدد گار 15 کی ٹیم پہنچی تو علاقے والوں نے ملزم کو پولیس حوالے کیا. ملزم کے خلاف بچی کے والد طارق کی مدعیت میں زیادتی کا مقدمہ درج کرلیا گیا ہے.مدعی کا کہنا ہے کہ ملزم بچی کو زبردستی ایک گھر میں لے گیا اور زیادتی کا نشانہ بنایا. مقدمہ درج کرکے تفتیشی پولیس کو منتقل کردیا ہے. بچی کو میڈیکل کے لئے جناح اسپتال منتقل کردیا گیا.