کابل، 18 جولائی (یو این آئی) طالبان رہنما ملا ہیبت اللہ اخوندزادہ نے افغان بحران کے سیاسی حل پر زور دیتے ہوئے کہا ہے کہ ان کی تنظیم تمام معاملات کو بات چیت کے ذریعے حل کرنے کے لئے پرعزم ہے ، لیکن افغان حکومت امن مذاکرات میں وقت ضائع کر رہی ہے۔

طالبان رہنما نے اتوار کے روز کہا کہ طالبان ہراس موقع کا فائدہ اٹھانا چاہیں گے جس سے ملک میں اسلامی حکومت قائم ہو اورملک میں امن و سلامتی قائم رہے۔ طالبان دنیا بھر کے ممالک کے ساتھ بہتر، مضبوط سفارتی، معاشی اور سیاسی تعلقات کاحامی ہے اور ہم اپنے ہمسایہ ممالک کو یقین دلانا چاہتے ہیں کہ ہم اپنی سرزمین کااستعمال دوسرے ممالک کی سلامتی کے لئے خطرہ بننے کے لئے نہیں ہونے دیں گے۔

لیکن دوسرے ممالک کو بھی سمجھ لینا چاہئے کہ وہ بھی افغانستان کے اندرونی معاملات میں مداخلت کرنے سے باز رہیں۔ طالبان اپنے یہاں سفارت خانوں، غیر ملکی تنظیموں اور سرمایہ کاروں کی حفاظت کے لئے کام کریں گے۔طالبانی رہنما نے کہا کہ ان کی تنظیم ملک میں اسلامی قانون کے دائرے میں اور قومی مفادات کے مطابق اظہار رائے کی آزادی کے تئیں پرعزم ہے اور صحافیوں کو انہیں دواہم نکات کو ذہن میں رکھنا چاہئے اور صحافت کے معیارات پر عمل کرناچاہیے۔