تبلیغی جماعت سے وابستہ انڈونیشیائی اراکین کی ضمانت کے لئے سیشن کورٹ جانے کا راستہ صاف

ممبئی۔4 مئی ۔ (ورق تازہ نیوز ) انڈونیشیا سے تعلق رکھنے والے تبلیغی جماعت سے وابستہ 12 احباب جن میں 6 مرد اور 6 خواتین شامل ہیں، جو کہ گذشتہ ایک ہفتہ سے قید و بند کی صعوبتیں جھیل ر ہے ہیں اور جن کے مقدمہ کی پیروی جمعیة علماءمہا راشٹر کر رہی ہے آج باندرہ مجسٹریٹ میٹرو پولیٹین عدالت نے یہ کہتے ہوئے درخواست ضمانت کو مسترد کردیا کہ اس مقدمہ میں کئی ایسے قانونی نکات ہیں جس کی سماعت کا اختیار باندرہ عدالت کو نہیں ہے ،دفاع نے کہا کہ اس سے انڈونیشائی اراکین کی ضمانت کے سیشن کورٹ جانے کا راستہ صاف ہو گیا ہے اور انہیں جلد انصاف ملنے کی امید جاگ اٹھی ہے ۔ اس بات کی اطلاع آج یہاں اس مقدمے کو مفت قانونی امداد فراہم کرنے والی تنظیم جمعیة علماءمہاراشٹر کے صدر مولانا حافظ محمد ندیم صدیقی نے دی ہے۔
واضح رہے کہ 29 فروری 2020 کو تبلیغی جماعت کے طریقہ کار کو دیکھنے کے لئے انڈونیشا کا ایک وفد انڈیا کے مرکز نظام الدین دہلی آیاچند دن قیام کے بعد ۶مارچ کو انڈو نیشا کا وہ وفد بذریعہ ٹرین ممبئی پہونچا اور نوی ممبئی کے مختلف علاقوں میںقیام پذیر رہا،ملک میںاچانک لاک ڈاﺅن کے اعلان اور پھر مرکز کا معاملہ سامنے آنے کے بعد انہیں حراست میں لے کرکے باندرہ میں کورنٹائن کر دیا گیاتھا،ا ن کا ٹسٹ کرایا گیا جن میں سے10 لوگوں کی رپورٹ نگیٹیو آئی،کورنٹائن کی مدت مکمل ہوتے ہی پولیں نے انہیں گرفتار کرکے ان پر پاسپورٹ کے ساتھ چھیڑ چھاڑ کرکے غیر قانونی طریقہ سے انڈیا میں داخل ہونے،کرونا وائرس پھیلانے جیسے مختلف الزامات عائد کرتے ہوئے اقدام قتل دفعہ 307 اور دفعہ 304 انڈین پینل کورٹ دفعہ 14 اور سیکشن کوڈ 19 سینٹرل ایکٹ کے تحت مقدمہ درج کیاہے۔
جمعیة علما مہا راشٹر نے ان اراکین کی ضمانت کے لئے باندرہ میٹرو پولٹین مجسٹریٹ کورٹ میں درخواست ضمانت داخل کی تھی جس پر سماعت کے دوران دفاع نے اس بات پر زور دیا کہ چونکہ ملزمین پر بہت سی ایسی دفعات لگائی گئیں جن میں کئی اہم قانونی نکات شامل ہیں جس کی وجہ سے باندرہ مجسٹریٹ میٹرو پولیٹن کورٹ کو سماعت کا اختیار نہیں ہے اس لئے وقت کو ضائع نہ کرکے فوری طور پر اسے خارج کیا جائے تاکہ ملز مین کو قید و بند کی صعوبتوں سے جلد نجات مل سکے ،بہرحال اس عدالت سے درخواست ضمانت مسترد ہو نے کے بعد انڈونیشیائی اراکین کی ضمانت کے لئے سیشن کورٹ جانے کا راستہ صاف ہو گیا ہے ،آج عدالت میں جمعیة لیگل ٹیم کے وکلا ایڈوکیٹ عشرت علی خان اور ممبئی جماعت کے گوونڈی،و باندرہ کے ذمہ داران مولانا اسعد،پرویز بھائی و دیگرعدالت میں مو جود تھے۔