یوتھ کانگریس نے اداکارہ کنگنا رانوت کے خلاف ملک مخالف بیان دینے کے الزام میں دہلی کے سنسد مارگ تھانہ میں ایف آئی آر درج کروائی ہے۔ یوتھ کانگریس کے قومی سکریٹری امریش رنجن پانڈے اور لیگل سیل کے رکن ایڈووکیٹ امبج دیکشت نے کنگنا رانوت کے خلاف سوشل میڈیا انسٹاگرام پر ملک مخالف بیان دینے کے الزام میں دہلی کے تھانہ میں شکایت درج کرائی ہے۔

شکایت میں اس بات کا تذکرہ کیا گیا ہے کہ اداکارہ کنگنا رانوت کے انسٹاگرام پر 7.8 ملین سے زیادہ فالوورس ہیں۔ اس لیے انھوں نے قصداً غیر ذمہ دارانہ رویہ اختیار کرتے ہوئے جمہوریہ ہند کے تئیں نفرت پیدا کرنے والا پوسٹ کیا۔ حال ہی میں کنگنا رانوت کو پدم شری ایوارڈ سے نوازا گیا تھا۔ ان کو اپنی حد کا خیال رکھتے ہوئے بیان دینا چاہیے۔

یوتھ کانگریس نے اپنی شکایت میں لکھا ہے کہ ہم اظہارِ رائے کی آزادی میں یقین رکھتے ہیں، لیکن یہ ایک حد تک ہونی چاہیے۔ ایک عوامی زندگی سے جڑے شخص کو اس طرح کا تبصرہ سوچ سمجھ کر کرنا چاہیے۔ ملک مخالف بیان، تشدد پیدا کرنے والا بیان عوامی پلیٹ فارم پر مناسب نہیں ہے۔ اس لیے کنگنا رانوت کے خلاف یوتھ کانگریس کی طرف سے تعزیرات ہند کی دفعہ 124اے، 504 اور 505 کے تحت ایف آئی آر درج کی گئی ہے۔

واضح رہے کہ اس سے قبل کانگریس نے بھی بالی ووڈ اداکارہ کنگنا رانوت کو ناسمجھ سرکاری اداکارہ قرار دیتے ہوئے ان پر ملک سے غداری کا مقدمہ چلانے کا مطالبہ کیا تھا۔ کانگریس نے کنگنا سے پدم شری سمیت سبھی ایوارڈ واپس لینے کا مطالبہ بھی کیا ہے۔ دراصل حال ہی میں کنگنا نے کہا تھا کہ 1947 میں ملک کو ملی آزادی بھیک تھی، ملک کو اصلی آزادی 2014 میں ملی ہے۔

ورق تازہ نیوز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں  https://t.me/waraquetazaonlineاور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔