Waraqu E Taza Online
Nanded Urdu News Portal - ناندیڑ اردو نیوز پورٹل

بی جے پی کو چندہ دینے والوں میں وادھون بھی شامل امیتابھ گپتا ک ے اجازت نامے کی پسِ پشت بی جے پی ماسٹر مائند ہوسکتی ہے: سچن ساونت

IMG_20190630_195052.JPG

ممبئی: وادھون گروپ بی جے پی کو اہم چندہ دینے والا ہے، جس کی بناءپربی جے پی نے اس کی وقتاً فوقتاً مدد بھی کی ہے۔ وادھون فیملی کے 23 لوگوں کو مہابلیشور جانے کا اجازت نامہ دینے والے وزارتِ داخلہ کے اسپیشل چیف سکریٹری امیتابھ گپتا کی تقرری فڈنویس حکومت نے کی تھی۔ ان کی جانب سے جو خط دیا گیا تھا اس کے پشِ پشت بی جے پی کے بڑے لیڈران کی’سفارش‘ سے انکار نہیں کیا جاسکتا۔ اس لیے اس پورے معاملے میں بی جے پی ہی ماسٹر مائنڈ ہوسکتی ہے۔ریاست کی مہاوکاس اگھاڑی حکومت نے امیتابھ گپتا پر کارروائی کی ہے، اگر مودی حکومت میں ہمت ہو تو وہ اب آگے کی کارروائی کرے۔ یہ باتیں آج یہاں مہاراشٹرپردیش کانگریس کمیٹی کے جنرل سکریٹری وترجمان سچن ساونت نے کہی ہیں۔

سچن ساونت نے مزید کہا ہے کہ وادھون اور بی جے پی کے نہایت قریبی تعلقات ہیں اور وادھون گروپ کی بیشتر کمپنیوں کی جانب سے بی جے پی کو بھرپورفنڈ دیا گیا ہے۔ اسی وادھون کمپنی کے دیوان ہاوسنگ فائنانس لمیٹیڈ نامی گروپ کے تحت قائم کیے گیے آرکیڈبلیو ڈیولپرپرائیویٹ لمیٹیڈ، اسکیل ریئلٹرس پرائیویٹ لمیٹیڈ ودرشن ڈیولپرس نامی کمپنیوں کے ذریعے 20کروڑ روپیے کا چندہ بی جے پی کو دیا گیا ہے۔ اس معاملے میں سب سے اہم بات یہ ہے کہ یہ کمپنیاں گزشتہ تین معاشی سالوں میں منافع میں نہیں تھیں، اور وہ اتنا چندہ نہیں دے سکتی تھیں۔ اس کے باوجود اتنی بڑی رقم ان کمپنیوں نے بی جے پی کو دی ۔ انتہائی خفیہ طریقوں سے ہوئے اس لین دین میں بی جے پی نے الیکشن کمیشن کو ان میں سے دو کمپنیوں کے پین ڈیٹیل بھی نہیں دیا۔ اس لیے اس بات سے انکار نہیں کیا جاسکتا کہ یہ لین بی جے پی حکومت کی مہربانیوں سے ہوا ہے۔اسی طرح وادھون کمپنی کی پری ویلیج ہائی ٹیک کمپنی کی جانب سے وجیے درگ بندرگاہ کو ڈیولپ کیا جارہا ہے، اس میں بھی بی جے پی کے ممبرپارلیمنٹ اور مودی کے خصوصی معتمد ومعاون آر چندرشیکھر کی کمپنی کی حصہ داری ہے۔ اس سے ثابت ہوتا ہے کہ وادھون اور بی جے پی کے بڑے لیڈران کے درمیان کس قدر قریبی تعلقات ہیں اور ان کے درمیان کس بڑے پیمانے پر لین دین ہوتا ہے۔ اس پسِ منظر میں بی جے پی کے سابق ممبرپارلیمنٹ کریٹ سومیا نے کارروائی کرنے کے نام پر جو ڈرامہ شروع کیا ہے، اس میں کوئی سچائی نہیں ہے۔ سومیا کو اس طرح کی ڈراے بازی کی عادت ہے۔

سچن ساونت نے یہ سوال بھی کیا کہ وادھون کے خلاف سی بی آئی کا لوک آوٹ نوٹس ہے، اس کے باوجود انہیں گرفتار کرنے میں اتنی تاخیر کیوں کی جارہی ہے؟ امیتابھ گپتا کے ذریعے وادھون کو دیے گیے خط کے سامنے آتے ہی ریاست کی مہاوکاس اگھاڑی حکومت نے 24گھنٹے کے اندر امیتابھ گپتا کو رخصت بالجبر پر بھیجتے ہوئے تفتیشی کارروائی شروع کردی ہے۔ اس طرح کا ایکشن فڈنویس حکومت کے پانچ سالہ دور میں کبھی دیکھنے کو نہیں ملا۔ کسی بھی طرح کی تفتیش کے بغیر ہرمعاملے میں کلین چیٹ دینے کی ’یک نکاتی ‘ اسکیم فڈنویس نے شروع کررکھی تھی۔ اس لیے بلامطلب الزامات عائد کرنے کا ڈرامہ بی جے پی کے لیڈران نہ کریں تو ہی بہتر ہوگا۔