بینک لون معاملے میں فرار چل رہے وجے مالیا کو پی ایم ایل اے کورٹ نے بھگوڑا قرار دیا

0 22

ممبئی،5 جنوری(پی ایس آئی)

بینکوں کا لون لے کر فرار چل رہا شراب کاروباری وجے مالیا کو پی ایم ایل اے کورٹ نے مفرور قرار دے دیا ہے. وجے مالیا کو بھگوڑے اقتصادی مجرم اعلان کرنے کے لئے ئڈی نے کورٹ میں عرضی دائر کی تھی. اس درخواست پر آج فیصلہ آیا ہے. پی ایم ایل اے کورٹ کے بعد مالیا نئے قانون کے تحت ملک کا پہلااقتصادی بھگوڑا بن گیا. بتا دیں کہ کورٹ نے اس فیصلے کو 26 دسمبر 2018 کو 5 جنوری 2019 تک کے لئے محفوظ رکھا تھا. مالیا نے پی ایم ایل اے کورٹ نے دلیل تھی کہ وہ مفرور مجرم نہیں ہے اور نہ ہی منی لانڈرنگ کے جرم میں ملوث ہے. اس سے پہلے وجے مالیا نے دسمبر مہینے میں درخواست کیا تھا کہ اسے اقتصادی بھگوڑا مجرم اعلان کرنے کے لئے ئڈی کے ذریعے شروع کی گئی کارروائی پر روک لگائی جائے. کورٹ نے مالیا کی اس عرضی کو مسترد کر دیا تھا.

بتا دیں کہ وجے مالیا نے بامبے ہائی کورٹ کے فیصلے کو بھی سپریم کورٹ میں چیلنج کیا تھا. ساتھ ہی مالیا نے مطالبہ کیا تھا کہ کورٹ اس کی املاک کو ضبط کرنے کی کارروائی پر بھی روک لگائے. ئڈی (ای ڈی) نے اپنی درخواست میں مالیا کو اقتصادی جرم میں بھگوڑا اعلان کرنے کی مانگ کی تھی. ساتھ ہی اس کی جائیداد ضبط کی جائے اور نئے ایف ای او قانون کی دفعات کے تحت اسے مرکز کے کنٹرول میں لایا جائے. خاص بات یہ ہے کہ ای ڈی نے اپنے پہلے کی درخواست میں کہا تھا کہ مالیا کا شروعات سے ہی قرض ادا کرنے کا کوئی ارادہ نہیں تھا جبکہ اس کے اور ایم ایس یوبی ایچ ایل (یونائیٹڈ بریوریج ہولڈنگ لمیٹڈ) کے پاس کافی املاک تھیں جو قرض ادا کرنے کے لئے کافی تھیں ، مالیا نے جان بوجھ کر ایسا کیا ہے.اسلئے مالیا اقتصادی بھگوڑا مجرم قرار دیا جائے اور اس کے اثاثوں ضبط کی جائے.

مالیا کے اقتصادی طور پر بگوڑا اعلان ہو جانے کے بعد اس کے اثاثوں فوری طور پر اثر کے ساتھ ضبط کی جا سکتی ہے. اس کے ساتھ ساتھ اقتصادی بھگوڑا کی فہرست میں وہ بھی آتا ہے جس کے خلاف درج جرائم کے لئے گرفتاری وارنٹ جاری کیا گیا ہوتا ہے یعنی کی نیرو مودی اور میہل چوکسی پر بھی اس کارروائی کی تلوار چل سکتی ہے. غور طلب ہے کہ شراب کاروباری اور بھارتی بینکوں سے قرض لے کر ملک چھوڑ کر بھاگنے والے وجے مالیا بینکوں کے قرض اداکرنے کو تیار ہیں. وجے مالیا نے ٹویٹ کر کہا ہے تھا کہ وہ بھارتی بیکو کے سارے قرض ادا کرنے کو تیار ہیں، مگر وہ سود نہیں دے سکتا ہے.