بہار میں پر تشدد احتجاج : ہجوم نے ٹرین کو آگ لگادی : ویڈیو دیکھیں

ملک بھر کے نوجوان اگنی پتھ اسکیم کی مخالفت کر رہے ہیں۔ بہار، اتر پردیش، اتراکھنڈ سے لے کر راجدھانی دہلی تک کے نوجوان سڑک پر نکل کر اس منصوبہ کے خلاف آواز اٹھا رہے ہیں۔ دہلی میں جمعرات کو نوجوانوں نے ریلوے بھرتی امتحان میں تاخیر اور نئی شروع کی گئی اگنی پتھ اسکیم کی مخالفت کی۔ ان لوگوں نے بعد میں ایک ٹرین کو بھی روک دیا۔ یہ جانکاری ایک افسر نے دی۔

پولیس ڈپٹی کمشنر (باہری ضلع) سمیر شرما نے کہا کہ ’’تقریباً 20-15 لوگ ریلوے اسٹیشن نانگلوئی پر جمع ہوئے اور ریلوے بھرتی امتحانات میں تاخیر اور حال ہی میں شروع کی گئی اگنی پتھ اسکیم کے خلاف احتجاجی مظاہرہ کیا۔‘‘ اس کے بعد نانگلوئی تھانہ کے تھانہ انچارج فوراً موقع پر پہنچے اور مظاہرین سے پرامن ریلوے ٹریک خالی کرنے کی گزارش کی۔

واضح رہے کہ مرکزی کابینہ نے منگل کو ہندوستانی نوجوانوں کے لیے مسلح افواج میں سروس دینے کے لیے ’اگنی پتھ‘ بھرتی منصوبہ کو منظوری دی۔ اس منصوبہ کے تحت منتخب نوجوانوں کو ’اگنی ویر‘ کی شکل میں جانا جائے گا۔ ان میں سے تقریباً 46 ہزار کی بھرتی اس سال کی جائے گی۔ ان کی سروس کی مدت صرف 4 سال کی ہوگی۔

بہار میں جاری احتجاج کے دوران مشتعل ہجوم نے ایک ٹرین کو آگ لگا دی گئی اور ریلوے ٹریک کو بلاک کر دیا گیا کیونکہ #UttarPadesh اور #Bihar کے مختلف مقامات پر #IndianArmy بھرتی کے خواہشمندوں نے مسلح افواج میں بھرتی کے لیے وزارت دفاع کی #Agnipath اسکیم کے خلاف احتجاج شروع کردیا ہے

’اگنی پتھ‘ پر چلا کر نوجوانوں کے صبر کا امتحان مت لیجئے، راہل گاندھی

مرکزی حکومت کی فوج میں بھرتی کے لئے لائی گئی ’اگنی پتھ‘ اسکیم کے خلاف ملک بھر میں نوجوانوں کی طرف سے کئے جا رہے شدید احتجاج کے درمیان کانگریس لیڈر راہل گاندھی نے وزیر اعظم مودی سے کہا کہ اس اسکیم کے ذریعے نوجوانوں

کے صبر کا امتحان مت لیجئے۔

راہل گاندھی نے ٹوئٹر پر لکھا، ’’نہ کوئی رینک، نہ کوئی پنشن۔ نہ دو سال سے کوئی ڈائریکٹ بھری۔ نہ چار سال کے بعد مستحکم مستقبل۔ نہ حکومت کا فوج کے تئیں احترام۔‘‘ انہوں نے مزید کہا ملک کے بے روزگار نوجوانوں کی آواز سنیے، انہیں اگنی پتھ (آگ کی راہ گزر) پر چلا کر ان کے صبر کا امتحان مت لیجئے وزیر اعظم صاحب۔‘‘

#WATCH | ہریانہ: پلوال میں ڈی سی کی رہائش گاہ پر تعینات پولیس اہلکاروں نے # اگنی پتھ اسکیم کے خلاف احتجاج کے دوران رہائش گاہ پر پتھراؤ کرنے والے مظاہرین کو خبردار کرنے کے لیے ہوائی فائرنگ کا سہارا لیا۔ وہ قریب ہی احتجاج کر رہے تھے۔ کچھ پولیس اہلکار زخمی، پولیس کی گاڑیوں میں توڑ پھوڑ

سمیر شرما کا کہنا ہے کہ ’’ان کی بات کو سکون کے ساتھ سنا گیا، جس میں انھوں نے کہا کہ 3-2 سال پہلے کچھ سرکاری امتحان کے لیے فارم بھرا تھا، لیکن بھرتی کے لیے امتحانات ابھی تک منعقد نہیں کیے گئے ہیں، اور وہ اب زیادہ عمر کے ہو گئے ہیں۔‘‘ حالانکہ پولیس مظاہرین کو قابو کرنے میں کامیاب رہی اور بھیڑ کو منتشر کر دیا گیا۔ سمیر شرما نے کہا ’’حالات اب قابو میں ہیں اور سبھی طلبا ریلوے ٹریک سے ہٹ گئے ہیں۔‘‘

قابل ذکر ہے کہ نوجوانوں کے ساتھ ساتھ کانگریس پارٹی اور دیگر اپوزیشن پارٹیاں بھی اگنی پتھ اسکیم کی مخالفت کر رہی ہیں۔ کانگریس لیڈر راہل گاندھی لگاتار اس تعلق سے مرکز کی مودی حکومت پر حملہ آور ہیں۔ ایک تازہ ٹوئٹ میں راہل گاندھی نے لکھا ہے ’’نہ کوئی رینک، نہ کوئی پنشن، نہ 2 سال سے کوئی ڈائریکٹ بھرتی، نہ 4 سال کے بعد مستحکم مستقبل، نہ حکومت کی فوج کے تئیں عزت۔ ملک کے بے روزگار نوجوانوں کی آواز سنیے، انھیں ’اگنی پتھ‘ پر چلا کر ان کے صبر کی ’اگنی پریکشا‘ (امتحان) مت لیجیے، وزیر اعظم جی۔‘‘