بھٹکل: تیراکی کیلئے گئے 16 سالہ حافظ قرآن ابراہیم کی نعش ندی سے برآمد

18

بھٹکل 12/جولائی(2019) دو روز قبل دوستوں کے ساتھ تیرتے ہوئے کڈوین کٹہ ڈیم میں ڈوب کر لاپتہ ہونے والے نوجوان کی نعش آج جمعہ دوپہر کو شرالی وینکٹا پور ندی سے برآمد کی گئی۔

خیال رہے کہ بدھ کی شام کو موسلادھار بارش کے دوران 16 سالہ حافظ قران ابراہیم عابدہ اپنے دوستوں کے ساتھ کڈوین کٹہ ڈیم میں تیرنے کے لئے گیا تھا، بتایا گیا ہے کہ ابراہیم تیراکی میں نہایت ماہر تھا، مگر بارش کی وجہ سے ڈیم کے اندر اتنا زیادہ پانی تھا اور بہاو اتنا تیز تھا کہ وہ بہاو میں بہہ کر لاپتہ ہوگیا تھا۔ اطلاع ملتے ہی بھٹکل کے عوام میں غم کی لہر دوڑ گئی تھی اور کافی نوجوان پل بھر میں کڈوین کٹہ ڈیم سمیت اطراف کے تمام علاقوں میں اس کی تلاش میں جٹ گئے تھے، بدھ کی شام سے لے کر جمعرات شام تک غرق ہونے والے ابراہیم کا پتہ نہ چلنے کی بنا پر آج جمعہ صبح مینگلور اور مرڈیشور سے غوطہ خوروں کی بھی خدمات حاصل کی گئی تھی۔ اور گہرے پانی میں اس کی تلاش کی جارہی تھی۔ بتایا گیاہے کہ آج شام کو کاروار سے بھی غوطہ خوروں کی ٹیم بھٹکل پہنچنے والی تھی، مگر دوپہر قریب ایک بجے اس کی نعش وینکٹاپور ندی میں اوپر آگئی۔ اطلاع کے مطابق بھٹکل کے عبدالرزاق نامی نوجوان نے پہلے اس کی نعش ندی میں تیرتے ہوئے دیکھی جس نے بعد میں دیگر نوجوانوں کو فوری طور پر خبر کی۔

بھٹکل میں صبح سے بارش نہ ہونے کی وجہ سے ندی آج نہایت پرسکون تھی اور کوئی بہاو بھی نہیں تھا، جیسے ہی نعش ندی سے اوپر آئی لوگوں نے رسی کی مدد سے نعش کو باہر نکالا اور فوری طور پر ایمبولنس کی مدد سے سرکاری اسپتال لے گئے۔

پوسٹ مارٹم کے بعد نعش گھروالوں کے حوالے کی جائے گی۔ اس وقت ہزاروں کی تعداد میں لوگ سرکاری اسپتال کے باہر موجود تھے اور میت کا آخری دیدار کررہے تھے۔

گھروالوں نے بتایا کہ میت اسپتال سے سیدھے فاروقی اسٹریٹ میں واقع مکان لے جائی جائے گی، شام 5:30 بجے جامع مسجد میں نماز جنازہ کے بعد پرانے قبرستان میں تدفین عمل میں آئے گی۔ اللہ نوجوان کی مغفرت فرمائے اور تمام پسماندگان کو صبر جمیل عطا فرمائے۔ اٰمین