بچوں میں ضد (Temperament) سے ہونے والے نقصانات،تدارک اور حل

749

بچّے چھوٹے ہوں یا بڑے ان میں ضد ایک جبلّی کیفیت ہوتی ہے۔اگر ان کی بات جلد مان لی جائے تو وہ خوش ہو جاتے ہیں ۔بات نہ مانی جائے تو پھر اپنے تمام حربوں سے زچ کردیتے ہیں۔بلآخر ان ہی کی بات چارو ناچار مان ہی لینا پڑتی ہے ۔

ضد کیا ہے؟ دراصل اپنی بھلی یا بُری بات، مرضی کے مطابق رویّہ اور بات منوالینے کانام ضد ہے۔بچّوں میں اپنی عمر اور محدود سوچ کے مطابق اور بڑوں میں اپنی انا،Ego مرضی ,ہٹ دھرمی، سرکشی، اسرار، اکّھڑپن، اڑیل روّیے، مزاج، عادات، طبع، طینت، سبھاؤ، خصلت اور بات منوالینے کا نام ضد ، Temperamentسرتابیاورانحراف ہے۔آپ اسے بال ہٹ(بچوں کا ضدّی پن ) تریا ہٹ (عورت کا ضد پر اڑے رہنا) اورجسے محاورے میں
"اونٹ کی پکڑ اور عورت کے مکر سے خدا بچائے”۔ بھی کہہ سکتے ہیں ۔

بری سرشت نہ بدلی جگہ بدلنے سے

چمن میں آکے بھی کانٹا گلاب ہونہ سکا

جن بچّوں کا لاڈ پیار بہت زیادہ ہوتاہے۔جو اکلوتے ہوتے ہیں یا گھر ،خاندان میں ایک لمبی مدت کے بعد پیدا ہوئے ہیں ان کی خصوصی دیکھ ریکھ، ناز ونعم، للّو پتّو کی وجہ سے وہ اپنے آپ کو خاص چیز سمجھنے لگتے ہیں۔ماں ڈانٹے ضد پوری نہ کرے تو باپ بچّے کی طرف متوّجہ اور بات پوری کرنے تیّار ۔والد ناز نہ اٹھائے، ضد نہ مانیں تو دادا، دادی تیاّر۔۔۔۔۔۔۔ننّھی جان سمجھتی ہے کہ وہ جو چاہے وہ ہو کر رہیے گا۔ مل کر رہے گا۔خواہ اس سے صحت کو نقصان پہنچے یا بے احتیاطی سے جسمانی، مالی اور وقت کا نقصان ہو۔.

ضدّی بچّے کچھ تو اپنے والدین کی سرشت کا پرتو ہوتے ہیں۔والدین کے عادات واطواراور ریڑھ کی ہڈی کے اثرات لیے پیداہوتے ہیں ۔کچھ بے جا لاڈ پیار، ہر بات کو مان لینے اور ضد پوری کرنےاور غلط انداز تربیت کا نتیجہ ہوتے ہیں۔

*Children Counselling*

*بچوں کےضدّی پن سے والدین بےبس ہیں ۔*

چند مسائل جو حل چاہتے ہیں؟
(1) بچہ ہماری بات نہیں مانتا۔
(2) پلٹ کر جواب دیتاہے۔حکم عدولی اور نافرمانی کرتا ہے۔
(3)بہت غّصہ وراور شدّت پسند ہے۔توڑ پھوڑ کرتا ہے۔
(4) گھر کا بنا کھا نا نہیں کھاتا۔junk food اور تیّار پیکیٹ پر جیتا ہے۔
(5)بغیر موبائل کے نہیں رہ سکتا۔ موبائل نہ ملے تو بُری طرح چیختا چلاتا ہے،بے تحاشہ رونے لگتا ہے۔گھرسرپر اٹھالیتا ہے۔ Addict جو ہوگیا ہے۔
(6) اپنے چھوٹے بھائی بہنوں سے کوئی چیز شئیر نہیں کرتا۔اپنا حصہ الگ اور سب سے بڑھ کر چاہتا ہے۔ نا انصافی unjustice کرتا ہے۔
(7) اسکول جانے، ہوم ورک وقت پر کرنے پر اکڑ دکھاتااور ٹال مٹول کرتا ہے۔ مختلف تاویلات اوربہانے تراشتا ہے۔
(8)بے جا ضدّی پن نے اسے شرارتی، بدتمیز ،سرکش ،اپنی بات منوانے والااور منہ پھٹ بنا دیا ہے.
(8) رشتہ داروں، اسکول کے ساتھیوں کو اپنی اکڑ اور منفی attitude دکھاتا ہے۔جس چیز کو پسند کرلے اسے حاصل کرنے کے لیے بضدہو جاتا ہے۔کسی طرح کی لچک compromise کو گوارا نہیں کرتا۔Teenagers میں یہ صفت نمایاں ہیں ۔

ضدی کی ضد کیسے آمادگی میں بدلے

(1) اپنی اولاد کی اصلاح وتربیت کے لیے الله سے دعائیں کی جائیں۔
(2) پیغمبروں، صحابہ، سلف صالحین کے واقعات اور قصے سنائے جائیں ۔
(3) پیار ومحبت سے بات کی جائے ۔احساس کمتری کو خوداعتمادی میں بدلنے کی تدابیر کیجیے۔
(4) اس کی عمر، جبلّت ،احساسات ،فطری تبدیلی کا لحاظ رکھتے ہوئے نفسیاتی رویہ اپنایا جائے ۔
(5) اس کی خوبیوں اور صلاحیتوں کا کُھلے دل سے اعتراف اور حوصلہ افزائی کی جائے ۔

*تُنک مزاج ہیں، مگر سرِشت ان کی نیک ہے*

*نہ ضد کہو نہ ہٹ کہو، ذری سی ان میں ٹیک ہے*

(6) اچھّے اور مثبت رخ دینے والے مشغلوں (Hobbies )میں مصروف و مشغول کردیا جائے ۔
(7) شاباشی، تعریف،خصوصی توجہ، حوصلہ افزائی کے ساتھ ساتھ تحفے اور انعامات دیے جائیں ۔ہر کوئی اپنی تعریف,قدردانی،Appereciation پر خوشی محسوس کرتا اور مزید ترقّی کے لیے کوشاں ہوتا ہے۔اس فطری ودیعت سے ضدی اور سرکش کو رام کیا جاسکتا ہے ۔
(8) جب بچّے ضّد پر اڑ جائے، سرکش اڑیل گھوڑے کارول ادا کرے تو والدین کو چاہیے کہ اس وقت حکمت، مصلحت اور نفسیاتی طریقے پر اس کی توّجہ دوسری طرف موڑنے کی کوشش کریں ۔
(9)غصّے کی حالت میں دونوں طرف سے گرما گرم مکالمے آگ میں گھی کا کام کرتے ہیں ۔والدین کو چاہیے کہ وہ اپنے غصّے پر قابو رکھیں۔بچے کو پیار اور محبت دیں۔ کڑوی دوا کو شکر کی کوٹنگ اسی لیے تو لگائی جاتی ہے۔

*سایہ کی پرورش ہے دامان بے خودی میں*

(10) فیملی کاونسلنگ گرہیں کھولنے کا کام کرتی ہے۔کاؤنسلر سے مشاورت کریں ۔Family counselling is to solve the critical & unsolved issues
(11) *بچوں کو سکھائیں*

آداب، تمیز، سلیقہ، مسکراہٹ، پیار، ایثار، سخاوت، صبر، عاجزی، انکساری، مفاہمت، مصالحت، ڈھلنا، مثبت سوچ، تعمیری نقطہ نظر ،غصہ پر قابوAnger management، دوسروں کی خدمت اور کام آنا، غلطی کا کھلے دل سے اعتراف، معذرت اور شکریہ ۔۔۔۔ ۔۔۔۔ Humanistic Approach, Cultural & Religious influences.
control over anger

گلُوں کی پرورش کے واسطے مالی ضروری ہے
(12) NLP, لائف کوچنگ کے اصولوں کو اپنائیں۔بچے کےfeelings احساسات کو سمجھنے کی کوشش کریںStudy of mind اور Phychology کو سمجھیں۔اس کی خودداری اور غیرت کو ابھاریں۔اضطرای قوت اور استعداد (آمادگی)
پیدا کریں۔
(13) اپنی انا Ego کی جنگ کو ختم کیجیے۔آپ کی ضد سے اھر آپ کی ناک بڑی بھی ہوگئی تب بھی آپ کے چہرے پر بُری لگے گی ۔”
کامیابی وہی حاصل کرتا ہے جو کوشش کرتا ہے، جدوجہد کرتا ہے
۔اپنی تمام تر صلاحیتوں سے کام لے کر کامیابی حاصل کرتا ہے۔

از:عبدالعظیم رحمانی ملکاپوری
(مصنف،کی زیر تصنیف کتاب *”پرورش” Paranring سے ایک مضمون)