عمرکھیڑ:11 جنوری۔(سلمان اشہر) شری راجا رام پربھاجی،اتروارگورنمنٹ سب ڈسٹرکٹ ہسپتال کے میڈیکل آفیسرو ماہر اطفال ڈاکٹر ہنومنت دھرماکرے عمر – 45 سال پوسد روڈ پر گورکھ ناتھ ہوٹل کے سامنے اسپتال جاتے ہوئے ایک نامعلوم نوجوان نے  سینے میں ایک اور پیٹھ میں 3 گولیاں ماریں جس سے ڈاکٹر دھرماکرے کی موقع پر ہی موت ہوگئی۔ اس واردات کے بعد ملزمان فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے ۔ اس طرح کی اطلاع عمرکھیڑگورنمنٹ اسپتال کے سپرنٹنڈنٹ رمیش مانڈک نے دی ہے ۔جس سے سرکاری ہسپتال کے احاطے میں کشیدگی کا ماحول پیدا ہو گیا۔


تفصیلی خبر کے مطابق ڈاکٹر ہنومنت دھرماکرے پچھلے 7 سالوں سے اتروار سرکاری سب ڈسٹرکٹ ہسپتال میں اطفال کے ماہر کے طور پر کام کر رہے ہیں۔ اس کے علاوہ عمر کھیڑ بس اسٹینڈ کے سامنے بچوں کا پرائیویٹ ہسپتال تھا۔گزشتہ 7 سالوں کے دوران ان کا کیرئیر بہت جامع رہا اور کسی بھی تنازع میں ان کا نام نہیں آیا، آج اچانک انہیں نامعلوم نوجوان نے گولی مار دی۔ نوجوانوں کی طرف سے ان پر کل چار گولیاں چلائی گئیں، ایک ان کے سینے کے دائیں جانب سے اور تین پیچھے سے۔

وہ آج 11جنوری کو شام تقریباً 5 بجے جب وہ اپنے پرائیویٹ ہسپتال جا رہے تھے کہ نامعلوم نوجوان نے انھیں اپنی شاٹ گن کا نشانہ بنایا اور سینے میں گولی مار دی۔علاج کے لیے ہسپتال داخل کرا یا گیا۔ یہاں کے سرکاری ہسپتال کے میڈیکل سپرنٹنڈنٹ ڈاکٹر رمیش منڈان نے بتایا کہ حملے میں وہ موقع پر ہی ہلاک ہو گئے۔واضح رہے کہ ڈاکٹر دھرماکرے ناندیڑ کے متوطن ہے اورشہر کے نمسکار چوک میں انکا مکان ہے۔

ورق تازہ نیوز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں  https://t.me/waraquetazaonlineاور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔ 


اپنی رائے یہاں لکھیں