عالمی وباء کے متاثرین میں گذشتہ سال کی طرح تیزی سے اضافہ ، اموات اور زیر علاج مریضوں کی تعداد بھی بڑھ گئی

نئی دہلی : ملک میں ایک بار پھر کورونا وائرس (کووڈ ۔19) کے معاملے پرانی رفتار سے بڑھنے لگے ہیں اور گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران ایک بار پھر تقریباً 59ہزارنئے کیس اور 257 مریضوں کی موت کی اطلاعات ہیں۔ گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران ملک میں کورونا وائرس کے 58886 نئے کیس درج ہوئے جو موجودہ وقت کا اب تک کے سب سے زیادہ کیس ہیں ۔ اس سے قبل جمعرات کو 53476 نئے معاملات درج کئے گئے تھے ۔ اس سے قبل چہارشنبہ کو 47262 ، منگل کو40715 ، پیر کو 46951 ، اتوار کو 43846 ، ہفتہ کو40953 اور جمعہ کو39726 کیسز درج کئے گئے تھے ۔جمعرات کے روز 251 اموات کے مقابل اسی عرصے کے دوران کورونا وائرس سے مرنے والے افراد کی تعداد 257 درج کی گئی۔ چہارشنبہ کویہ تعداد 275 تک پہنچ گئی تھی جبکہ منگل کے روز یہ تعداد 199 ، پیرکے روز 212 ، اتوار کے روز 197 ، ہفتہ کے روز 188 ، جمعہ کے روز 154 ، جمعرات کے روز 172 اورمنگل کے روز 131 اموات درج کی گئی تھیں۔ دریں اثنا ، ملک میں اب تک 5,55,04,440 افراد کو اینٹی کورونا ویکسین دی جاچکی ہے ۔جمعہ کی صبح مرکزی وزارت صحت کی جانب سے جاری تازہ اعداد و شمار کے مطابق گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران جان لیوا اور مہلک کورونا وائرس کے 58886 نئے کیس رپورٹ ہوئے جس سے مجموعی تعداد ایک کروڑ 18 لاکھ 46 ہزار 652 ہوگئی ہے ۔ اسی عرصہ کے دوران 32987 مریض صحت مند ہوئے جس سے شفایاب مریضوں کی تعداد اب تک 1,12,64,637 ہوچکی ہے ۔ ملک میں کورونا کے ایکٹیو کیسز کی تعداد 25874 کے اضافہ کے ساتھ جملہ 4,21,066 ہوگئی ہے ۔ اسی عرصے میں مزید257 مریضوں کی موتکے ساتھ اموات کی مجموعی تعداد بڑھ کر 1,60,949 ہوگئی ہے ۔ملک میں کورونا سے شفایابی کی شرح 95.09 فیصد ، ایکٹیو کیسز کی شرح بڑھ کر 3.55 فیصد ، جبکہ اموات کی شرح اب بھی 1.36 فیصد ہے ۔ملک میں ریاست مہاراشٹر ایکٹیو کیسز کے معاملہ میں سرفہرست ہے اور گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران اس ریاست میں ایکٹیو کیسز کی تعداد15397کے اضافہ کے ساتھ 2,64,001 ہوگئی ہے ۔ ریاست میں مزید 20444 مریض صحت مند ہوئے ہیں جس سے کورونا کو شکست دینے والے مریضوں کی تعداد 22,83,037 ، جبکہ 111 مزید مریضوں کی موت سے فوت ہونے والے کی مجموعی تعداد بڑھ کر 53795 ہوگئی ہے ۔ریاست کیرالہ میں گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران فعال کیسز کی تعداد 112 کے اضافہ پر 24690 ہوگئی ہے۔


اپنی رائے یہاں لکھیں