نئی دہلی : سپریم کورٹ نے حکومت سے ایک عرضی پر جواب داخل کرنے کیلئے کہا ہے جو اُن خواتین کو تیزی سے انصاف دلانے کیلئے رہنمایانہ خطوط وضع کرنے سے متعلق ہے جنہیں اُن کے این آر آئی شوہروں نے چھوڑ دیا ہے ۔ چیف جسٹس شرد بوبڈے کی بنچ نے حکومت کو نوٹس جاری کرتے ہوئے معاملہ کی سماعت جولائی میں مقرر کردی ۔

یہ پٹیشن این جی او پرواسی لیگل سیل نے دائر کی ہے ، جس کی نمائندگی ایڈوکیٹ جوس ابراہم کررہے ہیں ۔ انہوں نے ایسے تین واقعات اُجاگر کئے جس میں این آر آئی لڑکوں نے شادیاں کیں اور اس کے بعد اپنی بیویوں کو پریشانی میں مبتلا کر کے عملاً رفوچکر ہوگئے ۔ ان میں بعض معاملوں میں تو این آر آئی شوہر شادی کے چند یوم کے اندرون بیویوں کو چھوڑ گئے ہیں ۔


اپنی رائے یہاں لکھیں