Waraqu E Taza Online
Nanded Urdu News Portal - ناندیڑ اردو نیوز پورٹل

ایغور مسلمان معاملہ: ٹرمپ نے چین پر پابندی کی منظوری دے دی

IMG_20190630_195052.JPG

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے چین میں ایغور مسلمانوں پر ظلم و جبر میں ملوث چینی افسران کے خلاف پابندی عائد کرنے کے حوالے سے ایک قانون پر دستخط کردیے۔

یہ نیا قانون نسلی اقلیتوں کے ساتھ ظلم و زیادتی کرنے پر چین کو سزا دینے کے لیے کسی بھی ملک کی طرف سے اب تک کا سب سے اہم قانون ہے۔ اس نئی پیش رفت کے بعد پہلے سے ہی کشیدہ امریکا چین تعلقات کے مزید خراب ہوجانے کا خطرہ پیدا ہوگیا ہے۔

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے بدھ کے روز اس نئے قانون پر دستخط کردیے جس کے بعد امریکی انتظامیہ کو مغربی چینی صوبے سنکیانگ میں ایغور مسلمانوں کو حراستی مراکز میں رکھنے اور ان پر ظلم و جبر میں ملوث چینی افسران کے خلاف اقدامات کرنے کی اختیارات حاصل ہوگئے ہیں۔

صدر ٹرمپ نے اس نئے قانون پر دستخط کرنے کے بعد ایک بیان میں کہا،

”یہ قانون انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں مثلاً تطہیری کیمپوں کے منظم استعمال، جبراً مزدوری کرانے، چین میں ایغور اور دیگر اقلیتوں کی نسلی شناخت اور مذہبی اعتقاد کو ختم کرنے اور انہیں ظلم و جبر کا نشانہ بنانے والوں کو جواب دہ ٹھہراتا ہے۔“

’ایغور حقوق انسانی قانون‘ کے نام سے امریکی کانگریس میں تقریباً مکمل اتفاق رائے سے منظور یہ قانونی امریکی انتظامیہ کو ایسے چینی افسران کی شناخت کرنے پر زور دیتا ہے جو سنکیانگ میں ایغور اور دیگر اقلیتوں کے خلاف ‘جبراً حراست، ظلم اور زیادتی‘ کے لیے ذمہ دار ہیں۔ ایسے افراد کی شناخت کے بعد امریکا اپنے دائرہ اختیار میں آنے والے ان چینی افسران کے اثاثوں کو منجمد کرسکتا ہے او رملک میں ان کے داخلے پر پابندی عائد کرسکتا ہے۔