• 425
    Shares

ریاض : سعودی عرب نے تصدیق کی ہیکہ گزشتہ ماہ ایران کی نئی حکومت کے ساتھ اس کے پہلے دورکے براہ راست مذاکرات ہوئے تھے۔ ساتھ ہی سعودی وزیر خارجہ نے امید ظاہر کی ہیکہ یہ بات چیت دونوں ممالک کے درمیان مسائل کو حل کرنے کی بنیاد فراہم کرے گی۔ سعودی حکومت کا کہنا ہیکہ ایران کی نئی ابراہیم رئیسی حکومت کے ساتھ گزشتہ ماہ براہ راست بات چیت کا پہلا دور ہوا تھا۔ یہ دونوں حریف ممالک کے درمیان کشیدگی کو کم کرنے کیلئے اس برس شروع ہونے والے عمل کا حصہ تھا۔سعودی وزیر خارجہ شہزادہ فیصل بن فرحان نے کہا ہیکہ بات چیت کا تازہ ترین دور 21 ستمبر کو ہوا۔ البتہ انہوں نے ملاقات کا مقام نہیں بتایا۔ اسی تاریخ کو ایرانی صدر ابراہیم رئیسی نے نیویارک میں اقوام متحدہ جنرل اسمبلی سے خطاب کیا تھا۔ شہزادہ فیصل نے مزید بتایا ہے کہ یہ بات چیت ابھی تک ابتدائی مرحلہ میں ہے۔ ہمیں امید ہیکہ یہ فریقین کے درمیان مسائل کو حل کرنے کیلئے ایک بنیاد فراہم کریگی اور ہم اسے سود مند بنانے کی کوشش کریں گے۔خلیجی خطہ کے دونوں دیرینہ حریف سعودی عرب اور ایران نے 2016ء میں اپنے تعلقات منقطع کرلیے تھے۔ دونوں ممالک نے اس برس اپریل میں مذاکرات ایسے موقع پر شروع کیے، جب واشنگٹن اور تہران نیوکلیئر معاہدہ کو بحال کرنے پر تبادلہ خیال کررہے تھے جبکہ ریاض اور اس کے اتحادیوں نے اس کی مخالفت کی تھی۔

ورق تازہ نیوز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں  https://t.me/waraquetazaonlineاور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔ 


اپنی رائے یہاں لکھیں