آج لوک سبھا انتخابات ہوئے تو مہاراشٹر میں کون کتنی سیٹیں جیتے گا؟حیرت انگیز نتائج

2,123

نئی دہلی:29۔جولائی(ورق تازہ نیوز)گزشتہ 8 سالوں کی بات کریں تو نریندر مودی کی مقبولیت کے آس پاس کوئی دوسرا لیڈر نہیں آیاہے، لیکن زمینی حقیقت کیا ہے؟ کیا اگنیور آن گراؤنڈ، ‘سر تن سے جوڑا، نوپور شرما کیس جیسے مسائل نے بی جے پی کو نقصان پہنچایا ہے؟ مہاراشٹر میں حال ہی میں کافی سیاسی ہنگامہ آرائی ہوئی تھی اور لوگوں کے ذہنوں میں یہ سوال تھا کہ کیا آج انتخابات ہونے پر بی جے پی ریاست میں اچھا کام کرے گی۔ اس سوال کا جواب جاننے کے لیے انڈیا ٹی وی میٹرائز نے ایک سروے کیا ہے۔ آئیے، جانیں کہ سروے میں مہاراشٹر میں بی جے پی کتنی لوک سبھا سیٹیں جیت رہی ہے:

مہاراشٹر میں بی جے پی کو بڑا فائدہ:ووٹ فیصد کی بات کریں تو اس بار بی جے پی کو مہاراشٹر میں گزشتہ انتخابات کے مقابلے میں کافی فائدہ حاصل ہونے والا ہے۔ 2019 کے لوک سبھا انتخابات میں جہاں 28 فیصد لوگوں نے مودی کے نام پر ووٹ دیا تھا، اس بار یہ تعداد بڑھ کر 35 فیصد ہو جائے گی۔ ادھو ٹھاکرے کو بڑا نقصان ہونے والا ہے اور ان کی پارٹی کا ووٹ شیئر 17 سے 7 فیصد تک آ جائے گا۔ اسی وقت، شندے کا دھڑا، جو ادھو کا ساتھ چھوڑ گیا، 16 فیصد لوگوں کی پسند ہے۔

اگر آج انتخابات ہوتے ہیں تو پوار کی پارٹی کو 16 فیصد سے 17 فیصد ووٹ مل سکتے ہیں۔ ساتھ ہی راہل کی کانگریس 16 فیصد سے گھٹ کر 12 فیصد پر آ سکتی ہے۔
سیٹوں پر بی جے پی کو بڑا فائدہ:اگر آج لوک سبھا انتخابات ہوتے ہیں تو مہاراشٹر کی 48 لوک سبھا سیٹوں میں سے بی جے پی کو 26 لوک سبھا سیٹیں مل سکتی ہیں۔ گزشتہ انتخابات میں بی جے پی کو 23 سیٹیں ملی تھیں، اس طرح اگر آج انتخابات ہوتے ہیں تو اسے 3 سیٹیوں کافائدہ ہوگا۔

اس کے ساتھ ہی شیو سینا کی علیحدگی کے بعد ادھو کو 3 سیٹیں مل سکتی ہیں جب کہ ایکناتھ شندے کے دھڑے کو 11 سیٹیں مل سکتی ہیں ۔اگر آج انتخابات ہوتے ہیں۔ اگر آج انتخابات ہوتے ہیں تو شرد پوار کی این سی پی 6 سیٹیں جیت سکتی ہے، جب کہ 2019 میں اسے 4 سیٹیں ملی تھیں۔ ساتھ ہی، راہل کی قیادت میں کانگریس کا ووٹ شیئر گر سکتا ہے، لیکن وہ 2019 میں صرف 1 سیٹ جیتنے کے مقابلے میں 2 سیٹیں جیت سکتی ہے۔