اورنگ آباد:بی جے پی کو ووٹ دو ورنہ گاؤں میں رہنے نہیں دیا جائے گا’بی جے پی ایم ایل اے کی غنڈہ گردی

0 1

اورنگ آباد:(ف۔الف) ہمارے جمہوری ملک بھارت میں ہر ایک کو اپنی مرضی کے مطابق زندگی گزارنے،پسند نا پسند،کا پورا پورا اختیار دیاگیا لیکن ملک کے کچھ دشمن عناصر ایسے ہیں جو یہ چاہتے ہیں کہ ہر ایک کو بس ایک ہی رنگ میں رنگ دیا جائے۔ ملک کے خوبصورت گلدستہ میں صرف ایک ہی رنگ کے پھول سے سجانا چاہتے ہیں سیدھے سیدھے الفاظ میں کہا جائے تو ملک کو ہندو راشٹر بنانا چاہتے ہیں۔

یہی وجہ ہے کہ جب سے ملک کی باگ دوڑ آر ایس ایس کی بی ٹیم یعنی کہ بی جے پی کے ہاتھوں میں آئی ہے تب سے ملک میں ایک گہما گہمی اور ہا ہاکار مچی ہوئی ہے۔ جو ظلم وستم ڈھاکر زورزبردستی کرکے دوبارہ اقتدار پر قابض ہونا چاہتے ہیں ۔اسی سلسلہ میں اورنگ آباد سے قریب بدناپور تعلقہ میں آئندہ ۱۸ جنوری کونگر پنچایت کے الیکشن ہونے والے ہیں جس کے لئے تعلقہ جات میں کافی گہما گہمی چل رہی ہے ہر کوئی اپنی جیت کے ببانگ دہل دعوے کررہا ہے۔

لیکن بی جےپی کے نمائندے اپنی اصلیت دکھاتے ہوئے دھمکیاں دیتے ہوئے نظر آرہے ہیں ووٹرس کو بی جے پی کارکنان اور ایم ایل اے کی جانب سے دھمکیاں دی جارہی ہیں کہ اگر بی جے پی کے حق میں وو ٹ نہیں کیا تو گائوں میں رہنے نہیں دیا جائے گا۔ ۔۔۔تفصیلات کے مطابق بدناپور تھانے میں درج کی گئی شکایت کے مطابق بدناپور کے ایم ایل اے نارائن کوچے (بی جے پی)، ان کے محافظ اور سابق نگر سیوک بابا صاحب کرہلے (بی جے پی) نے بدنا پور کے سابق سرپنچ ہری کشن پنجاجی ہولکر کو پتھرہاتھ میں اٹھاکر دھمکی دیتے ہوئے کہا کہ وہ آئندہ نگر پنچایت انتخابات میں بی جے پی کو ہی ووٹ دیں ورنہ ا نہیں یہاں رہنے نہیں دیا جائے گا۔

بدناپور کے سابق سرپنچ ہریکسن پنجاجی ہولکرہمیشہ کی طرح شام تقریباً 5 بجے بدنا پور کے گنیش بابا مندر کے احاطے میں بیٹھے تھے جب ایم ایل اے نارائن کچے، بابا صاحب رگھوناتھ کرہلے، گجانن بھیم راؤ کرہلے اور ایم ایل اے کوچے کے باڈی گارڈ آئے۔ اس وقت ہولکر کو 18 جنوری کو ہونے والے نگر پنچایت انتخابات میں بی جے پی کے امیدواروں کے حق میں ووٹ دینے کی دھمکی دی اور کہا کہ اگر انہیں ووٹ نہ دیا گیا تو بدناپور میں کسی کو رہنے نہیں دیا جائے گااورتمہیں کوئی گائوں والا قبول بھی نہیں کرے گا۔

اور اگر تم ہمارے حق میں ووٹ دیتے ہوتو ہی ہم تمہارا خیال رکھیں گے ۔دھمکی دئے جانے کے بعد ہولکر نے اس سلسلے میں بدناپور پولس میں شکایت درج کرائی ہے۔آئندہ 18 جنوری کو ہونے والے نگر پنچایت انتخابات کے پیش نظر چار سیٹوں کے لیے سابق سرپنچ کو گاؤں میں نہ رہنے کی دھمکی دی گئی ہے۔

اس بار بدناپور نگر پنچایت انتخابات زوروں پر ہیں اور جیسا کہ ایم ایل اے نارائن کوچے نے بڑی چالاکی سے بی جے پی کی جیت کے لیے اپنا دائو کھیلا ہے لیکن ، اس میں کوئی شک نہیں کہ کانگریس،این سی پی اور شیوسینا مہاویکاس کے حق میں ٹکرا گئے ہیں، لیکن کسی کو معلوم نہیں تھا کہ ایم ایل اے اور اپوزیشن کے درمیان جھگڑا تھانے تک پہنچ جائے گا۔

اس سلسلہ میں وہاں کے مقامی افرا دکا کہنا ہے کہ ہم بی جے پی کی غنڈہ گردی کسی بھی طرح چلنے نہیں دیں گے اور اس طرح کی دھمکیوں سے ہم ڈرنے والے نہیں ہے ہمارے ملک کا قانون ہمیں اپنی پسند نا پسند کا حق دیتا ہے اور الیکشن میں NOTAکے استعمال کا حق بھی دیتا ہےکوڈ ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی کرنے والوں کو بخشا نہیں جائے گا: