اورنگ آباد شہر تبدیلئ نام مخالف مرکزی احتجاجی کمیٹی کا قیام

404

گوگل پر فورا قانونی کاروائی کرنے کا فیصلہ.
اورنگ آباد: 20 جولائی . ریاست مہاراشٹر کی ایکناتھ شندے حکومت نے حال ہی میں اورنگ آباد شہر کا نام تبدیل کرنے کا غیر دستوری فیصلہ کیا ہے۔ جسے مرکزی حکومت سے ابھی تک منظوری نہیں ملی ہے اس کے باوجود گوگل نے اورنگ آباد شہر کا نام تبدیل کر دیا ہے۔ اسی طرح شوسل میڈیا پر بھی ایس ٹی مہا منڈل کی بسوں پر بھی تبدیلئ نام کے بورڈ وائرل کیے جا رہے ہیں۔

گذشتہ ۳۵ برسوں سے مسلسل کچھ سیاسی جماعتیں اورنگ آباد شہر تبدیلی نام کو موضوع بنا کر اپنی سیاسی روٹیاں سیکنے کا کام کر رہی ہیں۔ ان تمام مسائل اور باتوں پر قابو پانے کے لیے آج اورنگ آباد شہر تبدیلی نام مخالف احتجاجی کمیٹی قائم کی گئی ہے۔ ١۹۹۴ء میں بھی اس معاملہ میں اسی کمیٹی نے قانونی لڑائی لڑی تھی۔

ایڈوکیٹ ایم۔اے۔لطیف نے اس مقدمے کے لیے تحریری استغاثہ Writ Petition تیار کی تھی۔ اتنا ہی نہیں بلکہ سپریم کورٹ آف انڈیا سے بھی اس تبدیلی نام پر اسٹے بھی اورنگ آباد شہر تبدیلی نام مخالف مرکزی احتجاجی کمیٹی نے ہی حاصل کیا تھا۔

ایڈوکیٹ جناب اور محترمہ قمر الدین اور کپل سبل نے سپریم کورٹ میں اس مقدمے کی کامیاب پیروی کی ۔ آج شہر کے کئی سیاسی، سماجی تنظیموں و جماعتوں سے وابستہ افراد نے اس معاملے میں عدالت سے رجوع ہو کر اورنگ آباد شہر تبدیلی نام کی مخالفت کا مصمم ارادہ ظاہر کیا ہے۔

اورنگ آباد شہر تبدیلئ نام مخالف مرکزی احتجاجی کمیٹی ان تمام افراد کو منظم کرکے اس تحریک کو کامیاب بنانے کی جد وجہد کرے گی۔ اس طرح کا منشاء ذمہ داروں نے ظاہر کیا ہے۔سابقہ رائٹ پٹیشن سپریم کورٹ کا آرڈر اور اس ضمن میں ہر قسم کے تاریخی و قانونی دستاویزات مہیا کرنے کا کام بھی یہ کمیٹی کرے گی۔کسی بھی طرح کے سیاسی مفاد، ذاتی مفاد، نام و نمود اور شہرت کے لیے کوئی بھی شخص یا جماعت اس معاملے میں مداخلت نہ کرے اور اس کمیٹی سے صلاح و مشورہ کیے بغیر کوئی بھی قانونی اقدام یا کروائی نہ کرے۔

اس طرح کی اپیل اور تنبیہ بھی اس کمیٹی کی جانب سے جاری کی گئی ہے۔ اورنگ آباد شہر تبدیلی نام مخالف مرکزی احتجاجی کمیٹی کی مجلس عاملہ۔ خالد احمد (صدر) ،سید رفیق احمد(نائب صدر) ، ایوب خان نانا(نائب صدر) ، ابو بکر رہبر (سکریٹری)، ڈاکٹر سہیل ذکی الدین (جوائنٹ سکریٹری) ، حسن پٹیل (خزانچی)، دیگر اراکین میں ہشام عثمانی، ایوب جاگیردار، الیاس کرمانی، ضمیر قادری، نعیم خان، شیخ جلیل، عبد الموحد حشر و شفیق احمد کو منتخب و مقرر کیا گیا ہے۔ اسی طرح نشر و اشاعت کی ذمہ داری ڈاکٹر سہیل ذکی الدین کو تفویض کی گئی ہے۔ یہ پریس ریلیز ڈاکٹر سہیل ذکی الدین نے دی ہے.