نماز مغرب کی اذاں کے اختتام کے ساتھ ہی زندگی کاسفر تمام!

اورنگ آباد: 23 فروری (ورق تازہ نیوز)شمیم بیگم زوجہ مرحوم محمداطہر کوتوال کا 75سال کی عمر میں مختصرسی معمولی علالت کے باعث بروز پیر22فروری کوبوقت اذانِ مغرب انتقال ہوگیا ۔جیسے ہی نماز مغرب کی اذاں لاﺅڈاسپیکر پرگونجی مرحومہ نے گھبراہٹ اور بے چینی محسوس کی اور حسب معمول سرپرپلو رکھا ۔ ان کے بڑ ے فرزند محمدارشد نے والدہ سے کہا کہ جلد دواخانہ چلتے ہیں لیکن انھوں نے انکار کرکے ہوئے کہاکہ اب میرا وقت آگیا ہے ۔ پھر اذان کے اختتام کے ساتھ ہی اُن کی روح قفسِ عنصری سے پرواز کرگئی ۔

مرحومہ شمیم بیگم صوم وصلوة کی پابند ‘با اخلاق ‘خلیق ‘ملنسار ‘ہمدر خصوصیات وخوبیوں کی حامل نیک خاتون تھیں ۔ان کی نماز جنازہ آج برو ز منگل23فروری کوصبح ساڑھے دس بجے سلک ملزکالونی کی مسجد میں ادا کی گئی اور حضرت شاہ سوختہ میاں ؒ درگاہ کے قبرستان میں تدفین عمل میں آئی ۔جلوس جنازہ اور نماز جنازہ میں بڑی تعداد میںافراد نے شرکت کی اورانیکی مغفرت کی دعا کی ۔

مرحومہ کے پسماندگان میں تین بیٹے محمدارشد ‘محمدجاوید‘ محمونوشاد کے علاوہ پانچ بیٹیاں ‘پوترے ‘پوتریاں ‘نواسے نواسیاں اوربھائی محمدمجیداللہ خاں(حیدر آباد)ہیں ۔وہ مرحوم جمیل اللہ خاں اورمرحوم محمدکلیم اللہ خاں مدنی (رکن جماعت اسلامی ہند ناندیڑ) کی حقیقی بہن ‘مرحوم محمد احمد اللہ خاں(فورمین عثمان شاہی ملز ناندیڑ) کی دختر اورعالی جناب محمدخلیل اللہ خاں (مرحوم )‘ حضرت شاہ محمدفضل اللہ خاںمظہرمرادچشتیہ ‘عالیہ ‘ نظامیہ ‘مرادیہ( پربھنی) اورحضرت محمدامجد للہ خاں (مرحوم)کی حقیقی بھتیجی تھیں۔ادارہ”ورق تازہ“ مرحومہ کے افراد خاندان اور رشتہ داروں کے غم میںبرابر شریک ہے ۔

خداوند قدوس سے دعا گو ہے کہ وہ مرحومہ کی لغزشوں‘خطاوں ‘گناہوں کو معاف کرے ‘ان کی قبر کونوراورخوشبو سے بھردے ۔انھیں جنت الفردوس میں اعلیٰ ترین مقام عطاءکرے ۔ پسماندگان رشتہ داروں کوصبرجمیل عطاءکرے۔