انکم ٹیکس ڈپارٹمنٹ نے بہار کے وزیر صنعت سمیر مہاسیٹھ کے ٹھکانوں پر چھاپہ ماری

101

پٹنہ:انکم ٹیکس ڈپارٹمنٹ نے بدعنوانی کے خلاف جاری اپنی مہم کے دوران ایک بار پھر بہار میں سخت قدم اٹھایا ہے۔ خبر رساں ایجنسی اے این آئی کے ذریعہ دی گئی اطلاع کے مطابق انکم ٹیکس محکمہ کی 25 رکنی ٹیم نے بہار کے وزیر صنعت سمیر کمار مہاسیٹھ کے کئی ٹھکانوں پر چھاپہ ماری کی ہے۔

بتایا جا رہا ہے کہ وزیر صنعت کی رہائش اور دفتر سمیت کچھ دیگر مقامات پر انکم ٹیکس افسران کچھ اہم تفصیلات حاصل کرنے کے لیے پہنچے ہیں۔

قابل ذکر ہے کہ سمیر کمار مہاسیٹھ آر جے ڈی کوٹہ سے مہاگٹھ بندھن حکومت میں وزیر صنعت بنائے گئے ہیں۔ سمیر مہاسیٹھ مدھوبنی سے دوسری بار رکن اسمبلی بنے ہیں اور اس سے پہلے بھی وہ بہار حکومت میں وزیر رہ چکے ہیں۔ ان کی رہائش، دفتر اور دیگر ٹھکانوں پر انکم ٹیکس ڈپارٹمنٹ کی چھاپہ ماری سے ہلچل پیدا ہو گئی ہے۔

ذرائع کے حوالے سے موصول ہو رہی خبروں میں بتایا جا رہا ہے کہ انکم ٹیکس ڈپارٹمنٹ ساکار بلڈر کی تلاش میں ہے۔ اس گروپ کے پروموٹر اور سرکردہ افسران کے بارے میں پتہ کیا جا رہا ہے۔ پٹنہ اور کچھ دیگر مقامات پر انکم ٹیکس کی جو چھاپہ ماری ہوئی ہے، اس کا مقصد ساکار کے افسران تک پہنچنا ہی ہے۔ دراصل ساکار گروپ کے پروموٹر بہار حکومت کے ایک وزیر کے رشتہ دار ہیں۔

بہرحال، جہاں تک وزیر صنعت سمیر مہاسیٹھ کی سیاسی زندگی کا سوال ہے، 1977 سے وہ سیاست میں سرگرم ہیں اور 2003 سے 2009 تک بہار اسمبلی کونسل کے رکن بھی رہے ہیں۔ 1998 میں سمیر مہاسیٹھ نے آئی سی اے آر کے ڈائریکٹر کا عہدہ سنبھالا تھا۔ 2008 میں وہ اطفال مزدور کمیشن کے رکن رہے اور پھر 2013 میں سوشل اولمپک بہار کے سربراہ رہے۔