’انکاؤنٹر کا وقت آ گیا ہے‘، کرناٹک کے وزیر کا دھمکی آمیز بیان

1,445

بنگلورو: (ایجنسیز)کرناٹک میں بی جے پی لیڈر پروین نیٹارو کے قتل سے پارٹی لیڈران میں اشتعال دیکھنے کو مل رہا ہے۔ ملزمین کے خلاف لگاتار سخت کارروائی کا مطالبہ کیا جا رہا ہے اور کرناٹک کے وزیر اعلیٰ بسوراج بومئی نے پہلے ہی اعلان کر دیا ہے کہ ریاست میں ’یوگی ماڈل‘ نافذ کیا جائے گا۔

اب ریاستی حکومت میں وزیر اشوت نارائن نے ایک قدم آگے بڑھ کر انکاؤنٹر کیے جانے کی بات کہہ دہی ہے۔اشوت نارائن نے دھمکی آمیز انداز میں کہا ہے کہ ’’ریاست میں اب انکاؤنٹر کا وقت آ گیا ہے۔ ایسے واقعات کو برداشت نہیں کیا جا سکتا۔‘‘ ساتھ ہی وہ کہتے ہیں کہ ’’یہ یقینی بنایا جائے گا کہ مستقبل میں ایسے قتل کے واقعات کبھی پیش نہ آئیں۔ آنے والے دنوں میں ہم ایسی کارروائی کرنے والے ہیں کہ یہ بدمعاش ڈر جائیں گے، ایسا کرنے سے پہلے ہزار بار سوچیں گے۔‘‘

اشوت نارائن نے یہ بھی واضح لفظوں میں کہہ دیا کہ وزیر اعلیٰ انکاؤنٹر کے لیے تیار ہیں اور ان کی طرف سے یقین دلایا گیا ہے کہ ملزمین کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی۔واضح رہے کہ جمعرات کو کرناٹک کے وزیر اعلیٰ بسوراج بومئی نے کہا تھا کہ اتر پردیش میں جیسے حالات ہیں، وہاں کے لیے یوگی فٹ بیٹھتے ہیں۔ ضرورت پڑنے پر کرناٹک میں بھی یوگی ماڈل نافذ کیا جائے گا۔ ان کے اس بیان نے کافی کچھ صاف کر دیا تھا۔ کرناٹک میں بی جے پی کارکنان بھی لگاتار مطالبہ کر رہے ہیں کہ ریاست میں ملزمین کی ملکیت پر بلڈوزر چلوائے جائیں اور وکاس دوبے جیسا انکاؤنٹر ہو۔