انٹرویو: ٹائیگر شراف ٤٠٠ دھماکوں کے درمیان کیا لائیو ایکشن

دھماکوں کے درمیان کیا لائیو ایکشن

ٹائیگر شراف مسلسل ہٹ فلمیں دے رہے ہیں. انتہائی شائستہ ٹائیگر کی اداکاری میں مختلف قسم کی ہے، ساتھ ہی وہ اسٹائل آئکن ‘کے طور پر بھی قائم ہو چکے ہیں. ٹائیگر شراف سے ہم نے بات چیت کی:

♨️Join Our Whatsapp 🪀 Group For Latest News on WhatsApp 🪀 ➡️Click here to Join♨️

"باغی 3 ‘اب تک کی سب سے بڑی ایکشن فلم مانی جارہی ہے آپ کا اس فلم میں ایکشن کا کیسا تجربہ رہا!

– ہم نے مائنس -7 ٹمپریچر میں، 400 بم بلاسٹس کے درمیان، بغیر شرٹ پہنے، 40 دن تک ایکشن سیکونس کیا. صبح اٹھ کر کارڈیو کرتا تھا، تاکہ شیپ میں رہوں. "باغی 3 ‘میں لائیو ایکشن کرنا ہوتا تھا، تاکہ فیصلہ تاریخ پر فلم ریلیز ہو سکے. اس فلم میں میں نے” اونجرس ‘ سیریز کی فلموں کی ایکشن اسٹائل سے پریرنا ليي خوشی کی بات ہے کہ ٹریلر کو اچھا رسپانس ملا ہے. ایک بات بتاؤں، مجھے ہالی وڈ سے بہت آفر ملتے رہے ہیں، لیکن جتنا محبت اور احترام مجھے بالی وڈ سے ملا ہے، اس سے الگ جاکر کچھ کرنے کا فی الحال تو کوئی ارادہ نہیں ہے. فی الحال، میری حیثیت نہیں ہے کہ میں کہیں اور جانے کے بارے میں سوچوں.

احمد خان کی خاص شناخت کوریوگرافر کی ہے. بطور ڈائریکٹر وہ کتنا متاثر کرتے ہیں؟

– کوریوگرافی تو ہر جگہ اہم ہے. چاہے کوئی ڈانس سیٹ کرنا ہو یا پھر سین بلاک کرنا ہو … ایک اچھا کوریوگرافر یقینا بہتر ڈائریکٹر ثابت ہوتا ہے، کیونکہ اسے تال اور رفتار کی معلومات ہوتی ہے. جس طرح احمد نریٹ کرتے ہیں، شوٹ کرتے ہیں، وہ لاجواب ہے. وہ اداکار سے جو کچھ چاہتے ہیں،اسے خود کرکے دکھاتے ہیں.

یہ بھی پڑھیں:  عالیہ بھٹ والد کے ساتھ کام کرنے سے خوفزدہ

رتیک روشن کے ساتھ آپ کی آخری فلم 2019 میں سرفہرست پر تھی . آپ اس طرح کی کامیابی پر کیسے رد عمل ظاہر کرتے ہیں؟

ایمانداری سے کہوں، کاروبار سے کوئی فرق نہیں پڑتا. میرے لئے، ‘وار’ میرا وہ وقت تھا جب میں اپنے ہیرو رتیک روشن کے ساتھ تھا. مجھے ایک ایسے آدمی کے ساتھ وقت بتانے کو ملا جسے میں نے ہمیشہ دیکھا ہے اور اسے اپنے ماڈل کے طور پر دیکھا ہے … ان کے ساتھ جم جانا، انہیں ٹرین میں دیکھنا، ان کے ساتھ سین میں پرفارم کرنا، مجھے میرا فیڈ بیک دینا، مجھے بتائیں کہ اسے ایک خاص لائن میں کیسے کہا جائے، ایک شاٹ کے بعد مجھے تھپ تھپانا ، وہ سب زندگی بھر میرے ساتھ رہے گا. جب میں نے ان کی فلم کرش دیکھی تھی تب سے وہ میرے ہیرو ہیں تب میں 12 یا 13 سال کا تھا. میری نسل کا ہر بچہ کرش کا پرستار تھا، اور آج تک ہے، انھیں سکرین پر تبدیل ہوتے ہوئے دیکھ کر، مجھے یقین ہے کہ وہ اصل میں ایک سپر ہیرو ہیں.

پہلی بار آپ نے والد جیکی سر کے ساتھ کام کرنے کا کیسا تجربہ رہا؟

– کیا کہوں! میری تو حالت خراب تھی. بولتا بھی کیا … آخر کار، باپ تو باپ ہوتا ہے. اگرچہ جلد ہی ان پر پریشر آ گیا، کیونکہ انہیں باپ ہی بننا تھا. یہی کام وہ حقیقی زندگی میں بھی کرتے ہیں تو دقت یہ ہو رہی تھی کہ سکرین پر نیا کیا کریں.

یہ بھی پڑھیں:  بچوں میں موبائل فون کے استعمال کے مضر اثرات ایک سائنسی وسماجی مطالعہ

tiger (1).jpg

WARAQU-E-TAZA ONLINE

I am Editor of Urdu Daily Waraqu-E-Taza Nanded Maharashtra Having Experience of more than 20 years in journalism and news reporting. You can contact me via e-mail waraquetazadaily@yahoo.co.in or use facebook button to follow me