امریکی نوعمروں کی یوٹیوب اورٹک ٹاک میں دل چسپی،فیس بُک نظرانداز:پیوسروے

65

امریکا کے معروف تحقیقاتی ادارے پیوریسرچ سنٹرکے فراہم کردہ اعدادوشمار کے مطابق امریکی نوعمر افراد نے گذشتہ سات سال کے دوران میں فیس بُک کا استعمال ترک کردیاہے اوروہ اس کے بجائے ویڈیو شیئرنگ ویب گاہوں یوٹیوب اور ٹک ٹاک پروقت گزاری کو ترجیح دے رہے ہیں۔

پیو کی اس سروے رپورٹ کے مصنفین نے لکھا ہے کہ ’’ٹک ٹاک امریکی نوعمروں کے لیے سوشل میڈیا کے ایک بڑے پلیٹ فارم کے طورپرابھری ہے جبکہ گوگل کے زیرانتظام یوٹیوب نوعمروں کے زیراستعمال سب سے عام پلیٹ فارم کے طور پر سامنے آئی ہے‘‘۔

پیو کا یہ ڈیٹا ایسے وقت میں سامنے آیا ہے جب فیس بک کی مالک کمپنی میٹا سوشل میڈیا پربالادستی کی جنگ میں ٹک ٹاک کے ساتھ نبردآزماہےاوراپنے اربوں ڈالرکے اشتہاری کاروبارکے حصے کے طور پر زیادہ سے زیادہ صارفین کواپنی طرف راغب رکھنے کی کوشش کررہی ہے۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ سروے میں شامل قریباً95 فی صد نوعمرافراد نے کہا کہ وہ یوٹیوب استعمال کرتے ہیں جبکہ 67 فی صد کا کہنا ہے کہ وہ ٹک ٹاک کے صارفین ہیں۔سروے میں شامل صرف 32 فی صد نوعمروں نے کہا کہ وہ فیس بک پرلاگ اِن کرتے ہیں -یہ ان 71 فی صد افراد کے مقابلے میں ایک بڑی کمی ہے جنھوں نے قریباًسات سال قبل اسی طرح کے ایک سروے کے دوران میں فیس بُک کے صارفین ہونے کی اطلاع دی تھی۔

ایک بارآن لائن ہونے کے بعد، فیس بک کو بوڑھے لوگوں کے لیے ایک مقام کے طور پردیکھا جاتا ہے جبکہ نوجوان ایسے سوشل نیٹ ورکس کی طرف راغب ہوتے ہیں جہاں لوگ تصاویراور مختصر ویڈیو کے ساتھ خودنمائی کرتے ہیں۔محققین نے بتایا کہ قریباً 62 فی صد نوعمرافراد نے کہا کہ وہ انسٹاگرام استعمال کرتے ہیں جو فیس بک کی مادرکمپنی میٹا ہی کی ملکیت ہے جبکہ 59 فی صد نے کہا کہ وہ سنیپ چیٹ استعمال کرتے ہیں۔

رپورٹ کے مطابق سنیپ چیٹ یا ٹک ٹاک استعمال کرنے والے ایک چوتھائی نوعمرافراد کا کہنا ہے کہ وہ ان ایپس کا قریب قریب مسلسل استعمال کرتے ہیں اور یوٹیوب کے نوعمرصارفین میں سے بیس فی صد کا بھی یہی کہنا ہے۔میٹا کے کاروبارکے لیے تھوڑی سی اچھی خبر یہ ہے کہ اس کی تصاویراورویڈیو شیئرنگ کی سروس انسٹاگرام امریکی نوعمروں میں 2014-2015 کے سروے کے مقابلے میں زیادہ مقبول تھی۔سروے میں شامل ایک چوتھائی سے بھی کم نوعمرافراد نے کہا کہ وہ ٹویٹرکبھی بھی استعمال کرتے ہیں۔

اس مطالعہ میں اس بات کی بھی تصدیق ہو گئی ہے کہ غیرمعمولی مبصرین کو کیا شبہ ہوسکتا ہے اور وہ یہ کہ95 فی صد امریکی نوعمر افراد کا کہنا ہے کہ ان کے پاس اسمارٹ فون ہیں۔نیزان میں سے زیادہ ترکے پاس ڈیسک ٹاپ یا لیپ ٹاپ کمپیوٹرہیں۔محققین نے یہ بات بھی نوٹ کی کہ سات سال قبل کے سروے کے نتائج کے مقابلے میں مستقل طور پر آن لائن رہنے والے نوعمربچّوں کی تعداد قریباً دُگنا ہوکر 46 فی صد ہوگئی ہے۔پیو کے مطابق یہ رپورٹ 1316 امریکی نوعمرلڑکے لڑکیوں کے سروے پرمبنی تھی۔ان کی عمریں 13 سال سے 17 سال تک تھیں۔ان سے رواں سال اپریل کے وسط سے مئی کے اوائل تک سوالات پوچھے گئے تھے۔